اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

یورپی یونین سے انخلا کیلیے برطانیہ کو 31 جنوری تک مہلت مل گئی

شاہی جوڑا اور یروشلم کا محافظ


WhatsApp
46



شاہی جوڑا اور یروشلم کا محافظ

تحریر-محمد جمیل راہی وزیرآبادی
23- اکتوبر 2019

"بادشاہ مر گیا ,بادشاہ زندہ باد" یہ وہ روائیت ہے جو برطانوی معاشرے میں صدیوں سے رائج ہے.جس کا مطلب آسان الفاظ میں یہ ہے کہ اگرچہ اس وقت برطانیہ میں جمہوری نظام ہے اور پالیمنٹ میں اکثریت حاصل کرنے والی جماعت کا قائد حکومت بناتا ہے جسے وزیراعظم پکارا جاتا ہے .لیکن وہ تمام تر اختیارات بادشاہ کے نام پر اسے ملتے ہیں اور وہ بادشاہ کا نمائندہ بن کر حکمرانی کرتا ہے.اس وقت ملکہ کی حکومت ہے.بادشاھت کا ادارہ صدیوں پرانا ہےلیکن قدامت پرست انگریز آج بھی بادشاھت کے اس قدیمی ادارے کو قائم رکھے ہوئے ہیں.ایک بادشاہ کی وفات کے ساتھ دوسرا اس کی جگہ لے لیتا ہے.اس لئے چونکہ یہ عہدہ کبھی خالی نہیں رہتا .یہی وجہ ہے کہ وہ قوم اس عہدے کا اس قدر دلی احترام کرتی ہے کہ علامتی طور پر اسے زندہ رکھا گیا ہے اور یہ مقولہ معروف ہے کہ بادشاہ کبھی نہیں مرتا.اس کی قوم اس کا احترام کرتی ہے اور اپنی روایات سے چمٹی رہتی ہےکیونکہ اس ادارے نے دنیا بھر میں حکومت کی ہے.دنیا بھر کر دولت اور وسائل کو لوٹ کر برطانیہ کا خزانہ بھرا ہے.یہ کہا جاتا رہا ہے کہ" ملکہ کی حکومت میں سورج کبھی غروب نہیں ہوتا"پھر عالمی جنگوں نے حالات کو پلٹ کر رکھ دیا.آہستہ آہستہ یہ حکومت سکڑتی گئی اور اب تھوڑے عرصہ تک "بریگزٹ" جیسے معاہدہ کے بعد برطانیہ دنیا کا اکیلا ملک رہ جائے گا جس کی کوئی باگزار ریاست باقی نہ رہے گی.دنیا ملکہ برطانیہ کی حکومت سے اپنے ناطے توڑ رہی ہے لیکن 1947 میں غلامی کی زنجیروں سے آزادی پانے والی مملکت پاکستان میں اس کے وفاداروں کی اولاد آج بھی اس سے اپنی غیر مشروط وفا داری اور عقیدت کا رشتہ قائم رکھے ہوئے ہے.اس کا مظاہرہ گذشتہ ہفتے پانچ روزہ دورے پر آئے شاھی جوڑے کی حکومتی اور نجی سطح ہر سرکاری استقبال اور ملاقاتوں سے لگایا جا سکتا ہے.ہم نئی نسل کو مطالعہ پاکستان پڑہاتے ہوئے تعلیم دیتے ہیں کہ انگریز ایک مکار قوم ہے یہ تاجر بن کر برصغیر میں آئے اور صرف تھوڑے ہی عرصہ میں حکمران بن بیٹھے.جنگ پلاسی میں نواب سراج الدولہ کو دکن کے غدار میر جعفر اور ٹیپو سلطان کو بنگال کے غدار میر صادق کی مدد سے شکست دے کر اس خطہ ہر اپنی حکمرانی کی راہ ہموار کی.پھر اس کے بعد دو صدیاں غلامی کی ایک خونچکاں داستان ہے.دھلی سے خون کی ھولی چلی جو آخری مغل حکمران کی برما میں رنگون کے قلعہ میں بے بسی اور ذلت آمیز موت پر پہنچی.اس کے بعد مایوسی کے اندھیرے چھائے رہے.عظیم آباد,صادق پور اور دھلی کے مراکز علوم کو بموں سے اڑا دیاگیا.آزادی کی آواز اٹھانے والوں کو تختہ دار پر چڑہا دیا گیا یا "دیس نکالا"کی سزا ئیں دے کر کالے پانی بھیج دیا گیا.انگریزوں کی حکمرانی,سکھوں اور مرہٹوں کے مظالم کے ساتھ ساتھ ھندووں کی نفرتیں ان کا نقدر بنی رہیں.ان مظالم سے نجات اور غلامی سے نکالنے کیلئے دھلی سے اٹھنے والی تحریک 1831 میں بالا کوٹ میں دریا کنہار کے کنارے دم ٹوڑ گئی.شہدائے بالا کوٹ کے بعد 1857 کی بغاوت جسے جنگ آزادی سے تعبیر کیا جاتا ہے نے رہی سہی امیدوں ہر بھی پانی پھیر دیا تھا .

1919 جلیانوالہ باغ اور جنرل ڈائیر کا قتل عام انسانیت کے ماتھے پر بد نما داغ کے طور پر یاد رکھا جائے گا.سیاسی کاوشوں, عسکری بازو کی جدوجہد اور عالمی حالات کی مجبوریوں کے باعث انگریز کو آزادئ برصغیر کی کڑوی گولی نگلنا پڑی.لیکن جاتے جاتے چند ایسے بیج بو گئے جن کی سزا اس خطہ میں بسنے والے 72 برس سے بھگت رہے ہیں.قادیان میں اسلام کی فکری عمارت کو مسمار کرنے کی غرض سے قادیانیت کا شجر خبیثہ بویا گیا اور اس کے ساتھ ساتھ تقسیم بر صغیر کے پلان میں سازشی تبدیلیاں برپا کی گئیں ھندو قیادت اور ریڈکلف کے دماغ نے تقسیم کی ایسی لکیریں کھینچیں کہ آج تک خون کی ندیاں بہ رہی ہیں.انگریز کی ساز باز سے کشمیر پر انڈیا کے ناجائیز قبضے کی راہ ہموار کی گئی.

اس طرح کشمیری قوم کے مقدر میں انگریز کے بعد ھندو کی غلامی کا بندوبست کیا گیا جس کا واضع مقصد نو مولود ریاست پاکستان کو کمزور کرنا تھا.ماضی میں بھی دو ھی طبقات تھے آج بھی وہی صورتحال ہے.نئے حکمرانوں کا کاسہ لیس اور قوم فروشی اور ضمیر فروشی پر آمادہ لوگ ,مستقل غلام ذھن ,جبکہ غلامی اور اس کی باقیات سے شدید نفرت کرنے والے.کشمیری بھائیوں کی آہ و بکا اور آزادی کی پکار بلند ہے.ایک قومی صد مہ سے دوچار قوم کس طرح اس فرنگی کی اگلی نسل کی مہمان نوازی کرتی رہی.یہ اپنے بھائیوں کے زخموں نمک پاشی سے کم نہیں.یہ موقع کس نے کیش کروایا.؟کیا پیغام تھا اس دورے میں؟سرکاری سطح پر شاھی جوڑے کی پذیرائی کس مقصد کی غمازی کرتی ہے؟کیا اپنے آباء اجداد کی روحوں کو تڑپانے کے لئے یہ خاص اہتمام کیا گیا تھا؟جان و مال اور عصمتوں کی قربانیاں پیش کرنے والے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کا یہ طریقہ نہ صرف حیرت انگیز ہے بلکہ مجرمانہ بھی.اس پر افسوس ہی کیا جاسکتاہے.قومی جرم. میں شریک اس طبقہ کا تعلق یقینی طور پر اس نسل سے ہو سکتا ہے جن کے لہو میں جو سرنگا پٹم کے گیٹ کھول کر ٹیپو سلطان کی شکست میں حصہ دار بنے تھے.کیا اس خطے میں نئی بساط بچھائی جا رہی ہے؟افغانستان میں قیام امن کے لئے دس ہزار کلو میٹر دور بیٹھا اسرائیل کا محافظ , پشتی بان. اور یروشلم کی بطور آسرائیلی. دارلخلافہ تحریک چلانے والا ڈونلڈ ٹرمپ بے چین نظر آتا ہے,کشمیر ایک جیل کی شکل میں تڑپ رہا ہے,عالمی برادری لاتعلق دکھائی دیتے ہیں, وطن کےحکمران لوگوں کے منہ میں صبر کا لالی ہاپ ٹھونس رہے ہیں,ترکی کو دھمکیاں دی جارہی ہیں,ایران زیر منقار ہے,شام وعراق خون آشام ہیں,کیا کسی نئی بندر بانٹ کا انتظام ہونے جا رہا ہے؟.ایسے میں سابقہ آقاؤں کی اولاد کی پاکستان آمد اورشاہی مہمانی کیا تماشہ ہے؟برطانیہ جس کی گلیاں کیچڑ آلودہ تھیں اسی خطہ کی دولت لوٹ کر ترقی یافتہ بنا,آکسفورڈ اسٹریٹ اور ریجنٹ اسٹریٹ کی تاریخ اٹھا کر دیکھ لو وہ اسی سر زمین سے لوٹے خزانوں کی مرہون منت ہے.مذھبی و سیاسی عبقری کہاں ہیں؟کیا اجتماعی دانش کا جنازہ نکل چکا ہے؟کیا ہمارہ اجتماعی ضمیر اس قدر مردہ اور پراگندہ ہو چکا ہے کہ اپنی غلامی کی ذلت آمیز یادوں کو گلے لگانے کے لئے بے چین اور آمادہ ہی دکھائی نہیں دیتے بلکہ ان کو دھرانے میں فخر بھی محسوس کرتے ہیں .قومی سوگ کےاس ماحول میں شاھی جوڑے کو پاکستان کا دورہ کرانا کس ایجنڈے کا حصہ ہے اس کا جواب دینا ارباب بست و کشاد کی ذمی داری ہے.وگرنہ مورخ یہ کہنے پر مجبور ہو گا کہ

یہ راز آخر کھل گیا سارے زمانے پر
حمیت نام تھا جس کا گئی تیمور کے گھر سے












WhatsApp




متعلقہ خبریں
’’بھارتی سپریم کورٹ آرٹیکل 370 ختم کرنے کا فیصلہ کالعدم ... مزید پڑھیں
حالیہ پاک۔بھارت بحران کشمیری حریت پسندوں کو کیا پیغام دیتا ... مزید پڑھیں
شکست خوردہ داعش جنگجوؤں کے بیوی بچوں کو بے ملک ... مزید پڑھیں
بی آر ٹی کا عذاب ... مزید پڑھیں
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب ... مزید پڑھیں
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان ... مزید پڑھیں
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک ... مزید پڑھیں
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت ... مزید پڑھیں
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا ... مزید پڑھیں
انڈیا کو پانی کی جنگ مہنگی پڑے گی ... مزید پڑھیں
محمد بن سلمان نے ولی عہدی تک کا سفر کیسے ... مزید پڑھیں
ساہیوال کا واقعہ: سی ٹی ڈی پنجاب کیا ہے اور ... مزید پڑھیں
امریکی صدر نے افغانستان کی جنگ میں بھارت کے کردار ... مزید پڑھیں
" آپریشن آل آؤٹ "تجزیاتی رپورٹ ... مزید پڑھیں
مقدس مندر میں خواتین داخل‘ تاریخ رقم ، ہنگامے شروع ... مزید پڑھیں
انڈین کون ہیں اور کہاں سے آئے ہیں؟ انڈیا کی ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
شاہی جوڑا اور یروشلم کا محافظ
’’بھارتی سپریم کورٹ آرٹیکل 370 ختم کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دے‘‘ ، اے جی نورانی
حالیہ پاک۔بھارت بحران کشمیری حریت پسندوں کو کیا پیغام دیتا ہے؟
شکست خوردہ داعش جنگجوؤں کے بیوی بچوں کو بے ملک و قوم مستقبل کا سامنا
بی آر ٹی کا عذاب
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب اور امریکی مداخلت
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا

مقبول خبریں
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
انٹرنیشنل کرکٹ چاہیے بھلے ’بی ٹیم‘ ہی سہی
اکتوبر 1990 میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو پاکستان کے دورے پہ مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
وینا اداکاری سے گلوکاری کا سفر
وینا ملک کو زیادہ تر لوگ بطور اداکارہ و ماڈل جانتے ہیں مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ، کون کونسے بینک مزید پڑھیں ...