اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

یورپی یونین سے انخلا کیلیے برطانیہ کو 31 جنوری تک مہلت مل گئی

بھارت کو خوفزدہ کرنے والی پاکستانی آبدوز کی پراسرار تباہی کی کہانی


WhatsApp
51





پاکستان بحریہ کی تاریخ میں ایک آبدوز ایسی ہے جس کے کارنامے آج بھی لوگوں کے ذہنوں میں زندہ ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ اس کی پراسرار گمشدگی (درحقیقت تباہی) بھی اب تک کوئی بھول نہیں سکا۔

یہ ہے پی این ایس غازی (ایس 130) آبدوز، جو پاکستان نے 1963 میں امریکا سے لیز پر لی تھی۔

بنیادی طور پر یہ دوسری جنگ عظیم کے زمانے کی آبدوز تھی جو امریکی بحریہ کے لیے 1945 سے 1963 تک خدمات سرانجام دے چکی تھی اور پاکستان کو سیکیورٹی اسسٹننس پروگرام کے تحت 4 سالہ لیز پر 1964 میں ملی اور پاک بحریہ کا حصہ بن گئی۔

1965 کی جنگ میں یہ پاکستان کے پاس موجود واحد آبدوز تھی اور بھارت کے پاس ایک بھی نہیں تھی اور یہی وجہ ہے کہ اس جنگ کے دوران یہ بھارتی بحریہ کے لیے خوف کا باعث بنی رہی۔

جنگ کے دوران اس آبدوز کو بھارتی پانیوں میں تعینات کرتے ہوئے حکم دیا گیا تھا کہ وہ بھارتی بحریہ کے بھاری اور بڑے جنگی جہازوں کو ہی نشانہ بنائے، جس کے بعد یہ بھارت کے واحد ائیرکرافٹ کیرئیر آئی این ایس وکرانت کو نشانہ بنانے کے لیے ڈھونڈتی رہی، مگر وہ بندرگاہ سے نکلا ہی نہیں۔

اس دوران اس آبدوز نے بھارتی فضائیہ کے ریاست گجرات کے علاقے دوارکا میں واقعی راڈار اسٹیشن کو نشانہ بنانے کے پاک بحریہ کے مشن کی مدد بھی کی۔

17 ستمبر کو غازی نے سطح پر آکر بھارتی جہاز آئی این ایس برہماپتر کو 3 تارپیڈو سے نشانہ بنایا اور جوابی حملے کو آسانی سے ناکام بنادیا، وطن واپسی پر اس آبدوز کو ستارہ جرات، تمغہ جرات سمیت 10 جنگی اعزازات سے نوازا گیا۔

1965 کی جنگ کے بعد 1967 میں پاکستان نے ای کبار پھر امریکا سے اس آبدوز کی 4 سالہ لیز کا معاہدہ کیا اور اس کی حالت کو بہتر بنانے کے لیے ترک بحریہ سے مدد لی گئی۔

1971 میں جب پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی بڑھ چکی تھی تو بھارتی بحریہ نے اپنے ائیر کرافٹ کیرئیر آئی این ایس کو وشاکا پٹنم منتقل کردیا اور غازی کو اسے نقصان پہنچانے کا مشن ملا اور یہ مشن انتہائی خطرناک قرار دیا گیا تھا۔

14 نومبر 1971 کو وہ خاموشی سے بحیرہ عرب سے 3 ہزار میل دور خلیج بنگال میں بھارتی پانیوں میں داخل ہوئی اور اس وقت ظفر محمد کمانڈر تھے جبکہ ان کے ساتھ عملے میں 10 افسران اور 82 سیلرز شامل تھے۔

یہ آبدوز 2 نکاتی مشن پر کام کررہی تھی یعنی پہلا مقصد تو وکرانت کو ڈھونڈ کر تباہ کرنا جبکہ دوسرا بھارتی مشرقی ساحلی علاقوں میں بارودی سرنگیں لگانا، جس میں اسے کامیابی بھی ملی۔

اسی مشن کے دوران یہ آبدوز 4 دسمبر 1971 کو وشاکا پٹنم پورٹ پر سرنگیں لگانے اور وکرانت کی تلاش کے دوران پراسرار طور پر تباہ ہوکر ڈوب گئی۔

یہ ایسا پراسرار واقعہ ہے کہ اب تک اس آبدوز کے تباہ ہونے کی اصل وجہ تاحال سامنے نہیں آسکی، تاہم بھارتی دعویٰ تھا کہ اسے آئی این ایس راجپوت نے تین اور چار دسمبر کی درمیانی شب تباہ کردیا تھا مگر پاک بحریہ کی انٹیلی جنس نے اپنی تحقیقات اور فوجی معلومات کا تجزیہ کرنے کے بعد اسے مسترد کرتے ہوئے بتایا کہ غازی آبدوز حادثاتی طور پر بارودی سرنگیں بچھاتے ہوئے حادثے کا شکار ہوئی۔

اس حوالے سے غیرملکی ماہرین کی رائے بھی پاکستانی موقف کی تائید کرتی ہے جن کا کہنا تھا کہ غازی ممنہ طور پر ان بارودی سرنگون کا نشانہ بن گئی جن کو اس نے بچھایا تھا۔

بھارت نے اس حوالے سے امریکا اور روس کی جانب سے تحقیقات کی پیشکش کو مسترد کیا جس سے بھی پاکستانی موقف کو تقویت ملی۔

2003 میں بھارتی بحریہ کے غوطہ خوروں نے غازی سے کچھ چیزوں کو نکالا اور اس کے ساتھ شہید ہونے والے 6 پاکستانی سروس مین کی نعشوں کو بھی لے کر آئے، جن میں سے ایک پیٹی آفیسر مکینیکل انجنیئر تھے جبکہ ایک سیلر کی جیب سے ایک خط تھا جو انہوں نے اپنی منگیتر کے لیے لکھا تھا۔

ان سب کی بھارتی بحریہ کی جانب سے اعزازی فوجی تدفین کی گئی جبکہ جو اشیا برآمد ہوئیں ان میں راڈار کمپیوٹر، وار لاگز، تباہ شدہ ونڈ شیلڈ، چند فائلیں وغیرہ شامل تھیں اور اس کی تصاویر بھی جاری کی گئیں۔

1972 میں غازی میں سوار عملے کو حکومت پاکستان کی جانب سے بہادری کے ایوارڈز دیئے گئے اور یہ پاکستانی بحریہ کی تاریخ میں اب تک کی واحد امریکی ساختہ آبدوز بھی ہے، اس کے بعد آبدوزوں کے لیے فرانس سے مدد لی گئی۔

پاکبحریہ نے اس کے بعد آبدوزوں کے تحفظ کے پروگرام کو بھی بہت زیادہ بہتر بنایا جبکہ اس آبدوز کے حوالے سے آئی ایس پی آر کے تعاون سے 1998 میں ایک ٹیلی فلم غازی شہید بھی پی ٹی وی پر نشر ہوئی، تاہم لگ بھگ 48 سال گزرنے کے بعد بھی اس قومی نقصان اور سانحہ پر موجود اسرار کا پردہ چاک نہیں ہوسکا۔


WhatsApp




متعلقہ خبریں
بحیرہ عرب میں طوفان؛ کراچی کی ساحلی بستیوں میں سمندری ... مزید پڑھیں
وزیراعظم نے بابا گرو نانک یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھ ... مزید پڑھیں
آزادی مارچ کی کامیابی سے جمہوریت ختم اور طالبان حکومت ... مزید پڑھیں
کراچی میں شہریوں کے ہتھے ڈاکو چڑھ گئے، ایک ہلاک، ... مزید پڑھیں
نواز شریف کی حالت بدستور تشویشناک، گردوں کا مرض بھی ... مزید پڑھیں
نیو کراچی میں گڑھے سے ملنے والی لاشیں اغوا کیے ... مزید پڑھیں
خواجہ سعد رفیق ساس کی تدفین میں شرکت کے لیے ... مزید پڑھیں
جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما مفتی کفایت اللہ گرفتار ... مزید پڑھیں
ڈی آئی خان میں آزادی مارچ کے شرکا کو روکنے ... مزید پڑھیں
نوازشریف سے متعلق عدالت کے ہرفیصلے پرمن وعن عمل کریں ... مزید پڑھیں
2 طالبعلموں پر تھانے میں تشدد، 4 اہلکار معطل ... مزید پڑھیں
چوہدری شوگر ملز کیس؛ مریم نواز کے جوڈیشل ریمانڈ میں ... مزید پڑھیں
ایل او سی پر اشتعال انگیزی، بھارتی ناظم الامور کی ... مزید پڑھیں
موسمیاتی تبدیلیوں سے پیداوارمیں کمی، غذائی قلت کا خدشہ ... مزید پڑھیں
بھارتی آرمی چیف کےجھوٹ کوعالمی برادری کےسامنے بے نقاب کردیا، ... مزید پڑھیں
سندھ کے تمام سرکاری اداروں میں خواجہ سراؤں کیلئے نوکریوں ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
میگاکٹس لگانے پر نوازشریف کے گردے خراب ہونے کا خدشہ، ڈاکٹر شش و پنج کا شکار
بحیرہ عرب میں طوفان؛ کراچی کی ساحلی بستیوں میں سمندری پانی داخل
وزیراعظم نے بابا گرو نانک یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھ دیا
آزادی مارچ کی کامیابی سے جمہوریت ختم اور طالبان حکومت قائم ہوگی، فواد چوہدری
کراچی میں شہریوں کے ہتھے ڈاکو چڑھ گئے، ایک ہلاک، دوسرا زخمی
نواز شریف کی حالت بدستور تشویشناک، گردوں کا مرض بھی لاحق
نیو کراچی میں گڑھے سے ملنے والی لاشیں اغوا کیے گئے 2 بھائیوں کی نکلیں
خواجہ سعد رفیق ساس کی تدفین میں شرکت کے لیے پیرول پر رہا
جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما مفتی کفایت اللہ گرفتار
ڈی آئی خان میں آزادی مارچ کے شرکا کو روکنے کیلیے دفعہ 144 نافذ

مقبول خبریں
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
انٹرنیشنل کرکٹ چاہیے بھلے ’بی ٹیم‘ ہی سہی
اکتوبر 1990 میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو پاکستان کے دورے پہ مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
وینا اداکاری سے گلوکاری کا سفر
وینا ملک کو زیادہ تر لوگ بطور اداکارہ و ماڈل جانتے ہیں مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ، کون کونسے بینک مزید پڑھیں ...