اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

یورپی یونین سے انخلا کیلیے برطانیہ کو 31 جنوری تک مہلت مل گئی

جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت


WhatsApp
403



جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت

تحریر :محمد جمیل راہی ایڈووکیٹ
3مارچ 2019

بھارت کے زیر انتظام مقبوضہ وادی جموں کشمیر میں تحریک آزادی کو کچلنے کیلئے انسانی حقوق کی پامالی اور ظلم و بربریت جاری رکھنے میں انڈین فورسز نے کوئی کسر نہیں اٹھا رکھی ۔ظلم و جبر کا ہر حربہ آزمایا جارہا ھے اور متعدد ممالک خفیہ طور پر بھی ان مظالم کا حصہ بنے ہوئےہیں۔اس پر عالمی برادری کی مجرمانہ غفلت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ھے کہ ایک عرصہ سے مقبوضہ کشمیر میں انڈین فوج کے مظالم اور جبری تسلطْ کی خاتمے کی خاطر احتجاج کرنے والے نہتے مظاہرین پر پیلٹ گنوں سے حملے کئے جا رہے ہیں۔جس کے نتیجے میں بینائی سے محروم ہونے والے افراد کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ھے۔اس گن سے نکلنے والے باریک چھرے انسانی آنکھ میں پیوست ہو جائیں تو انکا نکالنا ممکن نہیں رہتا۔اور زخمی ہمیشہ کیلئے بینائی سے محروم ہو جاتا ہے۔اس پیلٹ گن کے چھروں سے بینائی کھونے والوں کی بڑی تعداد خواتین سمیت نوجوانوں اور معصوم بچوں کی ھے جن کی دنیا اندھیر ھے اور وہ زندگی بھر کیلئے قوت بینائی سے محروم ہو چکے ہیں۔اسلامی امہ بھی اس وقت دوھرے معیار اور بے حسی کا شکار نظر آتی ھے۔حال ہی میں امارات میں اختتام پذیرہونے والی اسلامی ممالک کی سربراہ کانفرنس میں بھی دیکھنے کو ملا۔57 ممالک کے اس اجلاس میں اگرچہ کشمیر میں جاری مظالم روکنے اور وسیع پیمانے پرکشمیری قوم کو نابینا بنانے کی قرارداد تو پاس ہوئی لیکن اس وقت اسکی کیا حیثیت رہ جاتی ھے جبکہ اسی کانفرنس کی سربراھی کیلئے بھارت کی وزیر خارجہ سشما سوراج کو بلایا گیا ہو؟ پاکستان نے اپنی ناراضی کا اظہار کرنے کیلئے اس کانفرنس کا بائیکاٹ کیا جسکی سربراہی کسی انڈین کو دی گئی ہو۔کیا یہ تاریخی غلطی اور بے حسی نہ ہے کہ ایک ایسی ریاست کو کرسئی صدارت پیش ہو جو مسلم ہونا تو درکنار تنظیم کی ممبر بھی نہ ہو؟یہ دوغلہ پن اور گھٹیا پن ہی سےتعبیر ہو گا۔ حکومت پاکستان کا کشمیری قوم کے سینوں پر مونگ دلنے والی اس کانفرنس کا بائیکاٹ اور احتجاج با لکل درست اور قابل تقلید ھے۔یہ ایسے موقع پر ہوا ھے کہ جب ایشیا ئی ہمسایہ ممالک پاک انڈیا پرجنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں۔

پاک فوج نے سرجدی خلاف ورزی کرنے والے بھارتی دو طیارے مار گرائے ہیں پائیلٹ کو ژندہ پکڑ کر واپس بھی کر دیا ھے لیکن غیر یقینی کی صورتحال پیدا ہو چکی جنگ کے خطرات ھنوذ موجود ہیں۔۔ایک طرف پورا خطہ ایٹمی جنگ کے خطرات میں گھرا ہوا ھےاور دوسر ی جانب کشمیری نوجوانوں نے سروں پر کفن باندھ کر انڈین قابض فوج پر خود کش حملوں کا آغاز کردیا ھے جسکی تازہ مثال پلوامہ فوجی حملہ ھے جو ایک کشمیری طالبعلم نے کیا جسکے نتیجے میں 44 فوجی ہلاک اور دو بسیں تباہ ہوئی ہیں

معروف برطانوی صحافی اور شہرۂ آفاق کالم نگار رابرٹ فسک نے دعویٰ کیا ہے ک ایل او سی کے قریب پاکستانی حدود میں جبہ بالاکوٹ میں انڈین طیاروں نے جو بم گرائے گئے وہ اسرائیل کے بنے ہوئے تھے۔ بی جے پی حکومت اور اسرائیل کے درمیان اسلام پسندوں کے خلاف مشترکہ آپریشن ہو رہا ہے۔ رابرٹ فسک اسے علاقائی امن کیلئے’’خطرناک‘‘ قرار دیتا ہے۔ رابرٹ فسک جیش محمد کے تربیتی کیمپ کو بھی ’’خیالی‘‘ قرار دیتا ہے کہ وہاں تو صرف چٹانیں تھیں اور درخت۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ھے کہ 2017ء کے دوران بھارت اسرائیلی اسلحہ کا سب سے بڑا خریدار تھا۔ 530ملین پائونڈ کا ایئرڈیفنس سسٹم، راڈار،اسلحہ، ہوا سے زمین میں مار کرنے والے میزائل سب کچھ خریدا گیا۔ یہ سارے ہتھیار فلسطینیوں پر آزمائے جا چکے تھے۔ میانمار(برما) نے روہنگیا مسلمانوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے۔ ایک طرف مغربی حکومتوں نے میانمار پر پابندیاں لگائی ہوئی ہیں۔ دوسری طرف اسرائیل کو کھلی چھٹی ہے کہ میانمار کی سفاک حکومت کو ٹینک، ہتھیار اور جنگی جہاز فروخت کرے۔ اس کی اجازت ہے۔ اسرائیل کے صحرائوں میں بھارت اور اسرائیل کے ’’خصوصی کمانڈوز‘‘ مشترکہ مشقیں کرتے ہیں۔ بھارتی کمانڈوز مہینوں اسرائیل کی ایئرفورس کے پاس رہ کر تربیت حاصل کرتے ہیں۔کھلونا بموں سے فلسطینی بچوں کو بیدردی سے شہید کرنے کی شیطانی و فرعونی حربوں کے بانی اسرائل نے ھندوستان کو پیلٹ گن دے رکھی ہے جس سے کشمیری نسل کو اندھا کیا جا رہا ھے۔

اسرائیلی وزیر اعظم بھارت کے دورے پر آیا تو بمبئی حملے کا ذکر کر کے مگر مچھ کے آنسو خوب خوب رویا۔ بھارت کے کئی دانش وروں نے آواز اٹھائی ہے کہ دائیں بازو کے انتہا پسند ہندوئوں اور صیہونیوں کے درمیان اشتراکِ عمل کو پسندیدہ قرار نہیں دیا جا سکتا۔۔گذشتہ روز بی جے پی سابقہ مرکزی راہنما نے مودی سرکار کی اس سازش کو بے نقاب کر دیا ھے کہ بی جے پی نے الیکشن جیتنے کیلئے انڈین فوج پر حملے کروا کر الزام پاکستان پر لگانے کا گھناؤنا منصوبہ بنا رکھا تھا ۔اب انڈین میڈیا رپورٹس آ چکی ہیں کہ بی جے پی نے بڑی تعداد میں برقعے خریدے ہیں۔ یہ برقعے انتہا پسند کارکنان کو پہنائے جا رہے ہیں۔ کارروائیاں وہ کریں گے۔ بدنام مسلمانوں کو کیا جائے گااور اسطرح مسلم خواتین کی بے حرمتی کے اسباب پیدا کئے جائیں گے۔ان حرکات سے حیرت اس وقت نہیں رھے گی جب ماضی میں انکی سابقہ کرتوتوں کا بھانڈا پھوڑا جائے۔ایک کردار ڈی پی دھر پال کاھےجسکا تعارف لازمی ھے۔ اسکا تعلق کشمیر سے تھا۔ اسے ہسپانیہ بھیجا گیا ۔ وہ ایک خاص مشن پر تھا کہ معلومات جمع کر کے لائے کہ ہسپانیہ سے مسلمانوں کا صفایا کس طرح کیا گیا؟۔ بھارت وہی کچھ کشمیری مسلمانوں کے ساتھ کرنا چاہتا تھا۔ یہی شخص ہے جو 1971ء میں مشرقی پاکستان میں بھارتی مداخلت کا معمار تھا۔ مداخلت کا منصوبہ اسی نے بنایا تھا۔ اس سے پہلے وہ سوویت یونین میں بھارت کا سفیر بھی رہ چکا تھا۔ اسی نے سوویت یونین اور بھارت کے درمیان ’’دوستی اور تعاون‘‘کا بیس سالہ معاہدہ کرایا۔ بنگلہ دیش بننے کے فوراً بعد، بھارت اور بنگلہ دیش میں دوستی کا جو پہلا معاہدہ ہوا تھا، وہ بھی اسی کے ذہن کا شاخسانہ تھا۔ ماسکو کے بھارتی سفارت خانہ آج بھی اس کی ’’خدمات‘‘ کی تصدیق کرتا ھے۔ وہ خود تو 1975ء میں مر گیا لیکن یوں دکھائی دیتا ھے کہ پچاس برس گزرنے کے باوجود اسکی بد روح انڈین ایجنسیوں کے اندر حلول کرچکی ھے ۔ھندوستان میں اپوزیشن کی اکیس جماعتوں نے مشترکہ طور پر بی جے پی ہر الزام لگایا ھے کہ اس نے مئی میں ہونے والے عام انتخابات جیتنے کیلئے فوج کو استعمال کیا اور ملکی سلامتی کو داؤ پر لگایا ھے۔اسکے علاوہ دانشوروں نے جنوبی ایشیا میں اس صیہونی ہندو گٹھ جوڑ کو سنگین خطرہ بھی قرار دیا ھے۔ضرورت اس امر کی ھے کہ بزدل اور مکار دشمنوں کی ان گھناؤنی سازشوں پر کڑی نظر رکھی جائے اور اتحاد امت کی تدابیر بروئے کار لائی جائیں۔یہی حالات کا تقاضہ اور دانشمندانہ تدبیر بھی ھے۔











WhatsApp




متعلقہ خبریں
’’بھارتی سپریم کورٹ آرٹیکل 370 ختم کرنے کا فیصلہ کالعدم ... مزید پڑھیں
حالیہ پاک۔بھارت بحران کشمیری حریت پسندوں کو کیا پیغام دیتا ... مزید پڑھیں
شکست خوردہ داعش جنگجوؤں کے بیوی بچوں کو بے ملک ... مزید پڑھیں
بی آر ٹی کا عذاب ... مزید پڑھیں
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب ... مزید پڑھیں
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان ... مزید پڑھیں
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک ... مزید پڑھیں
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت ... مزید پڑھیں
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا ... مزید پڑھیں
انڈیا کو پانی کی جنگ مہنگی پڑے گی ... مزید پڑھیں
محمد بن سلمان نے ولی عہدی تک کا سفر کیسے ... مزید پڑھیں
ساہیوال کا واقعہ: سی ٹی ڈی پنجاب کیا ہے اور ... مزید پڑھیں
امریکی صدر نے افغانستان کی جنگ میں بھارت کے کردار ... مزید پڑھیں
" آپریشن آل آؤٹ "تجزیاتی رپورٹ ... مزید پڑھیں
مقدس مندر میں خواتین داخل‘ تاریخ رقم ، ہنگامے شروع ... مزید پڑھیں
انڈین کون ہیں اور کہاں سے آئے ہیں؟ انڈیا کی ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
شاہی جوڑا اور یروشلم کا محافظ
’’بھارتی سپریم کورٹ آرٹیکل 370 ختم کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دے‘‘ ، اے جی نورانی
حالیہ پاک۔بھارت بحران کشمیری حریت پسندوں کو کیا پیغام دیتا ہے؟
شکست خوردہ داعش جنگجوؤں کے بیوی بچوں کو بے ملک و قوم مستقبل کا سامنا
بی آر ٹی کا عذاب
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب اور امریکی مداخلت
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا

مقبول خبریں
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
انٹرنیشنل کرکٹ چاہیے بھلے ’بی ٹیم‘ ہی سہی
اکتوبر 1990 میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو پاکستان کے دورے پہ مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
وینا اداکاری سے گلوکاری کا سفر
وینا ملک کو زیادہ تر لوگ بطور اداکارہ و ماڈل جانتے ہیں مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ، کون کونسے بینک مزید پڑھیں ...