اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

جیسنڈا آرڈرن کا کرائسٹ چرچ حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان

انڈین کون ہیں اور کہاں سے آئے ہیں؟ انڈیا کی قدیم تاریخ پر گرما گرم بحث


WhatsApp
75



تازہ ترین تحقیق سے دائیں بازو کے ہندوؤں کے دعووں کی نفی


دائیں بازو کے ہندو سمجھتے ہیں کہ انڈین تہذیب کا ماخد وہ لوگ تھے جو خود کو آریائی نسل کہتے تھے۔ یہ جنگجو خانہ بدوش قبیلہ تھا جو گھوڑوں پر سفر کرتا اور مال مویشی پالتا تھا اور جنہوں نے ہندو مذہب کی قدیم ترین کتابیں وید لکھیں تھیں۔ان دائیں بازو کے ہندوؤں کے مطابق آریا نسل کا آغاز انڈیا سے ہوا اور پھر وہ ایشیا اور یورپ کے وسیع علاقوں میں پھیل گئے جہاں انہوں نے انڈو یورپی زبانوں کی بنیاد رکھنے میں مدد دی جو آج تک بولی جاتی ہیں.

انیسویں صدی کے متعدد یورپی لسانی اور نسلی ماہرین، اور نازی جرمنی کے لیڈر اڈولف ہٹلر کو یقین تھا کہ آریا اعلیٰ نسل ہے جس نے یورپ فتح کیا تھا۔ تاہم ہٹلر ان کی نسل کو نوردک نسل سے جوڑتا تھا۔جب محققین آریا کی اصطلاح استعمال کرتے ہیں تو ان کی مراد انسانوں کا وہ گروپ ہوتا ہے جو انڈو یورپی زبانیں بولتے ہیں اور خود کو آریی نسل کہتے ہیں۔ اور ہم نے بھی اسی تناظر میں اسے استعمال کیا ہے۔ اس سے مراد ایک مخصوص نسل نہیں ہے جیسے ہٹلر سمجھتا تھا یا جیسے بعض ہندوں دائیں بازو کے لوگ تصور کرتے ہیں۔

کئی انڈین محققین نے' انڈیا سے شروعات' کے نظریے پر سوال اٹھائے ہیں۔ ان کی دلیل ہے کہ یہ آریا لوگ یا انڈویورپی زبانیں بولنے والے، اُن قبل از تاریخ مہاجرین کے کئی سلسلوں میں سے ایک ہوسکتے ہیں جو پہلے موجود ایک تہذیب کی تباہی کے بعد انڈیا آئے ہوں گے۔ وہ پہلی تہذیب ہڑپہ یا وادی مہران کی تہذیب تھی۔ یہ تہذیب موجودہ شمال مغربی انڈیا اور پاکستان کے علاقوں میں اس وقت پروان چڑھ رہی تھی جب مصر اور میسوپوٹیمیا کی تہذیبیں اپنے عروج پر تھیں۔تاہم دائیں بازو کے ہندو سمجھتے ہیں کہ ہڑپہ کی تہذیب بھی آریا یا ویدوں کی تہذیب تھی۔

ان دونوں نقطہ نظر رکھنے والے گروہوں کے درمیان کشیدگی گزشتہ چند برسوں میں بڑہی ہے، خاص طور پر جب سے ہندو قومپرست جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی 2014 میں اقتدار میں آئی ہے۔اور اس تنازع کے بیچ انسانی آبادیوں کی جینیات کا نیا علم سامنے آیا ہے جو قدیم ترین ڈی این اے کا استعمال کرکے یہ معلوم کرنے کی کوشش کرتا ہے کہ کن لوگوں نے کب اور کہاں ہجرت کی۔قدیم ڈی این اے کے استعمال کی وجہ سے قبل از تاریخ زمانے کی دنیا بھر کی تاریخ گویا دوبارہ لکھی جارہی ہے اور انڈیا سے متعلق بھی نئے نئے انکشافات سامنے آرہے ہیں۔

امریکہ کی ہارورڈ یونیورسٹی کے جینیاتدان ڈیوڈ ریخ کی قیادت میں اس موضوع پر تازہ ترین تحقیق مارچ 2018 میں شایع ہوئی، جس میں ان کو پوری دنیا سے تعلق رکھنے والے 92 محققین کا تعاون حاصل رہا اور یہ ماہرین جینیات، تاریخ، آرکیالوجی اور انتھراپولوجی کے بڑے نام ہیں۔

اس اسٹڈی کا نام 'دی جینومک فارمیشن آف ساوتھ اینڈ سینٹرل ایشیا ہے اور اس میں بڑے چونکا دینے والے انکشافات کیے گئے ہیں۔اسٹڈی میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ دس ہزار برس میں انڈیا کی جانب دو بڑی ہجرتیں ہوئی ہیں۔ پہلی جنوب مغربی ایران کے زگروز علاقے سے ہوئی، جو کہ بکریاں پالنے والا سب سے اولین خطہ کہا جاتا ہے۔ اس ہجرت سے زراعت کرنے اور مال مویشی پالنے والے لوگ انڈیا آئے۔

یہ ہجرت سات ہزار سے تین ہزار برس قبل مسیح میں ہوسکتی ہے۔ یہ لوگ جنوبی ایشیا کے پہلے سے آباد لوگوں میں مل گئے۔ اس سے قبل جو لوگ آباد تھے وہ افریقہ سے 65 ہزار برس قبل انڈیا آئے تھے اور انہوں نے مل کر ہڑپہ کی تہذیب کو جنم دیا۔

دو ہزار قبل مسیح کے بعد کی صدی میں انڈیا کی جانب دوسری ہجرت ہوئی جو کہ آریا لوگوں کی تھی اور یہ غالباً یوریشیائی خطے یعنی قازقستان سے ہوئی۔ ہوسکتا ہے یہ لوگ اپنے ساتھ سنسکرت زبان کی ابتدائی شکل کے ساتھ گھوڑے پالنے اور دیگر ہنر اور ثقافتی روایات لائے ہوں جیسا کہ جانوروں کی قربانی وغیرہ، جنہوں نے ہندو مت کی ابتدائی شکل کی بنیاد رکھی۔دیگر تحقیقات سے یہ بھی سامنے آیا ہے کہ انڈیا کی جانب اور بھی کئی ہجرتیں ہوئی ہیں، مثال کے طور پر جنوب مشرقی ایشیا کے لوگوں کی جو اسٹرو ایشیاٹک زبانیں بولتے تھے۔

دائیں بازوں کے کئی ہندوؤں کے لیے یہ انکشافات قبل قبول نہیں۔ وہ سکولوں کی تدریسی کتابیں تبدیل کرانے کے لیے مہم چلاتے رہے ہیں تاکہ ان میں سے آریا لوگوں کی ہجرت کی باتوں کو نکالا جاسکے۔ہندو قومپرست اگر یہ مان لیتے ہیں کہ آریا انڈیا کے ابتدائی باسی نہیں تھے اور یہ کہ ہڑپہ یا وادی مہران کی تہذیب ان سے بہت پہلے سے یہاں موجود تھی اور تو یہ ان کے لیے گھاٹے کا سودہ ہوگا۔ کیونکہ اس کا مطلب یہ ہوا کہ آریائی یا ان کے ویدوں کی ثقافت انڈیا کی تہذیب کا بنیادی اور واحد منبع نہیں تھی اور یہ کہ اس کی قدیمی بنیاد کہیں اور تھی۔

ہندو قومپرستوں کے لیے آبادی کے محتلف گروپوں کے مل جانے کا خیال بھی پسندیدہ نہیں ہے کیونکہ وہ نسلی پاکیزگی کو بنیادی درجہ دیتے ہیں۔ دوسری وجہ یہ ہے کہ اگر آریاؤں کی ہجرت کو تسلیم کرلیا جائے تو پھر آریاؤں کے بعد میں آنے والے مسلمان فاتحین، جیسا کے مغل وغیرہ، بھی ایک ہی سطح پر آجاتے ہیں۔ دونوں ہی ہجرت کرکے انڈیا آئے۔اس نئی تحقیق نے پرانی بحثوں کو اب ختم کرانے کی سعی کی ہے، لیکن یہ ہندو دائیں بازو کے لیے ایک بڑا دھچکہ ہے۔ سٹڈی کے شریک مصنف پروفیسر ریخ پر حملہ کرتے ہوئے انڈیا کی حکمراں جماعت کے رکن پارلیمان اور ہارورڈ کے سابق پروفیسر سبرامنیم سوامی نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ ہاروڈ کی تھرڈ ریخ اینڈ کمپنی کی تحقیق میں جھوٹ ہے ۔۔ جھوٹ اور اعداد و شمار۔

تاہم اس تحقیق کا اصل پیغام بہت امید افزا ہے۔ یعنی یہ کہ انڈیا کی تہذیب مختلف نسلوں اور تاریخوں سے مل کر بنی ہے

ٹونی جوزف کتاب 'دی ارلی انڈینز: دا سٹوری آف اور اینسیسٹرز اینڈ وی کیم فرام' کے مصنف ہیں جو انڈیا میں جگرناٹ نے شایع کی ہے


WhatsApp




متعلقہ خبریں
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان ... مزید پڑھیں
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک ... مزید پڑھیں
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت ... مزید پڑھیں
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا ... مزید پڑھیں
انڈیا کو پانی کی جنگ مہنگی پڑے گی ... مزید پڑھیں
محمد بن سلمان نے ولی عہدی تک کا سفر کیسے ... مزید پڑھیں
ساہیوال کا واقعہ: سی ٹی ڈی پنجاب کیا ہے اور ... مزید پڑھیں
امریکی صدر نے افغانستان کی جنگ میں بھارت کے کردار ... مزید پڑھیں
" آپریشن آل آؤٹ "تجزیاتی رپورٹ ... مزید پڑھیں
مقدس مندر میں خواتین داخل‘ تاریخ رقم ، ہنگامے شروع ... مزید پڑھیں
انڈین کون ہیں اور کہاں سے آئے ہیں؟ انڈیا کی ... مزید پڑھیں
مسلمانوں کی خاموشی انڈیا کے مستقبل کے لیے خطرناک ... مزید پڑھیں
طالبان کابل پر قبضے کے لیے تیاری کر چکے ہیں ... مزید پڑھیں
غلط مرد سے محبت: ’پہلے دلت شوہر کو والد نے ... مزید پڑھیں
میکسیکو میں لاپتہ افراد کی لاشیں ڈھونڈتی مائیں ... مزید پڑھیں
افغان مذاکرات میں پاکستان کا کردار ناگزیر کیوں؟ ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب اور امریکی مداخلت
ملّا عمر، امریکہ اور پاکستان
سپاہی چندو بابو لال سے پائلٹ ابھی نندن تک
جنوبی ایشیا میں اسرائیلی مداخلت
پلوامہ سے ایل او سی۔۔۔عبرتوں کی نئی کتھا
انڈیا کو پانی کی جنگ مہنگی پڑے گی
محمد بن سلمان نے ولی عہدی تک کا سفر کیسے طے کیا اور اب تک ان کی حکومت نے کیا اقدامات کیے ہیں
ساہیوال کا واقعہ: سی ٹی ڈی پنجاب کیا ہے اور کیسے کام کرتا ہے؟
امریکی صدر نے افغانستان کی جنگ میں بھارت کے کردار کا مذاق اڑا دیا
" آپریشن آل آؤٹ "تجزیاتی رپورٹ

مقبول خبریں
غیراخلاقی اشتہارات : آن لائن ٹیکسی سروس کریم کے خلاف درخواست دائر
جیسنڈا آرڈرن کا کرائسٹ چرچ حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان
ناتواں کندھوں پر بھاری ذمہ داری کا بوجھ : قومی ٹیم آج پریکٹس کا آغاز کرے گی
پی ایس ایل 4؛ شریک پلیئرز کو2 دن آرام کا موقع میسر آ گیا
’مجھے اپنے لبرل اور ماڈرن ہونے پر شرمندگی ہے‘
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
آواز اور روشنی کی مدد سے دماغ کی صفائی میں اہم کامیابی ویب ڈیسک بدھ 20 مارچ 2019 شیئر ٹویٹ تبصرے مزید شیئر امریکی جامعات کے ماہرین نے الزائیمرمیں مبتلا چوہوں پر آواز اور روشنی کے تجربات کئے ہیں جس سے حیرت انگیز نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ فوٹو: فائل امریکی جامعات کے ماہرین نے الزائیمرمیں مبتلا چوہوں پر آواز اور روشنی کے تجربات کئے ہیں جس سے حیرت انگیز نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ فوٹو: فائل بوسٹن: ایک نئی تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ روشنی اور آواز سے تحریک دینے سے دماغ سے وہ فاسد مواد خارج ہوجاتا ہے جو الزائیمر کی وجہ بنتا ہے۔ اسی عمل سے دماغی افعال کو درست کرنے میں بھی مدد ملتی ہے۔ ہم ایک عرصے سے جانتے ہیں کہ جیسے جیسے دماغ میں بی ٹا ایمائی لوئڈ نامی مادہ جمع ہوتا ہے تو وہ ایک اور زہریلے پروٹین ٹاؤ سے مل کر اعصابی سرگرمیوں کو مزید متاثر کرتا ہے اور یوں الزائیمر جیسی بیماری سر اٹھانے لگتی ہے۔ اب حال ہی میں معلوم ہوا ہے کہ الزائیمر کے شکار مریضوں کی دماغی لہروں میں بھی بے قاعدگی اور خرابی پائی جاتی ہے۔ دماغی خلیات یا نیورونز خاص طرح کی برقی تھرتھراہٹ خارج کرتے ہیں جنہیں دماغی امواج یا brain waves کہا جاتا ہے۔ اس سے قبل تحقیق سے معلوم ہوا تھا کہ الزائیمر کے مریضوں میں سب سے بلند فری کوئنسی والی ’گیما‘ دماغی لہروں میں واضح خلل آتا ہے۔ حالیہ چند برسوں میں کیمبرج اور ایم آئی ٹی کے ماہرین نے ثابت کیا ہے کہ بعض اقسام کی لائٹ تھراپی یا روشنی سے علاج کے بعد الزائیمر کے شکار چوہوں میں گیما لہریں دوبارہ بحال کی جاسکتی ہیں جو ثابت کرتی ہیں کہ دماغ میں بیماری کی وجہ بننے والے بی ٹا ایمائی لوئڈ میں کمی واقع ہورہی ہے۔ اب اسی ٹیم نے بتایا ہے کہ روشنی اور آواز کی مدد سے بعض مریضوں میں دماغی بہتری پیدا کی جاسکتی ہے جس کی تفصیلات جرنل سیل میں شائع ہوئی ہیں۔ ایم آئی ٹی کے پروفیسر لائی ہوائی سائی اور ان کے ساتھیوں نے الزائیمر والے چوہوں کو روزانہ 40 ہرٹز کی روشنی میں ایک گھنٹے تک رکھا۔ اس سے چوہوں میں دماغ کا دشمن بی ٹا ایمائی لوئڈ کم ہوا اور ساتھ ہی زہریلے ٹاؤ پروٹٰین کی مقدار بھی کم ہوئی ۔ اس کے بعد چوہوں کو مسلسل سات روز تک 40 ہرٹز کی آواز ایک گھنٹے تک سنائی گئی تو اس کے بھی اچھے نتائج برآمد ہوئے۔ اس سے نہ صرف دماغ میں آوازوں کے گوشے بلکہ یادداشت کے ایک اہم مرکز ’ہیپوکیمپس‘ سے بھی مضر کیمیکل اور پروٹین میں کمی دیکھی گئی ۔ اسی کے ساتھ دماغ میں خون کا بہاؤ بھی بہت بہتر ہوا جو ایک اضافی فائدہ ہے۔ آواز اور روشنی کی مدد سے دماغ کی صفائی میں اہم کامیابی
وہ خاتون جس کا پیشہ ہی بچے پیدا کرنا ہے
سوشل میڈیا پر 1600 دوست بنائیے اور امتحان میں اے پلس پائیے
سوشل میڈیا پر 1600 دوست بنائیے اور امتحان میں اے پلس پائیے
گوگل کی جانب سے ویڈیو گیم اسٹریمنگ کا باضابطہ اعلان
شرح پیدائش پنجاب میں کتنی ہے اور خیبر پختونخوا میں کتنی؟ اعدادوشمار سامنے آگئے
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب اور امریکی مداخلت
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
ناتواں کندھوں پر بھاری ذمہ داری کا بوجھ : قومی ٹیم آج پریکٹس کا آغاز کرے گی
پی ایس ایل4 کا میلہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی پہلی ٹائٹل فتح مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
’مجھے اپنے لبرل اور ماڈرن ہونے پر شرمندگی ہے‘
لاہور (ویب ڈیسک)) پاکستان میں عالمی یوم خواتین کے موقع پر ہونے مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
سعودی عرب کی پاکستان کو 2 پاور پلانٹس خریدنے کی منہ مانگی پیشکش
لاہور(ویب ڈیسک) سعودی عرب نے پنجاب کے دو پاور پلانٹس بغیر بولی مزید پڑھیں ...