اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

جیسنڈا آرڈرن کا کرائسٹ چرچ حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان

سانپ اور سیڑھی کا کھیل


WhatsApp
113



سانپ اور سیڑھی کا کھیل

جمہوری نظاموں پر مشتمل ممالک میں ہونے والے الیکشن اور آبادی کے تناسب سے ووٹرز کی تعداد کا تخمینہ لگانے کے بعدبا آسانی نتیجہ اخذ کیا جا سکتا ہے کہ ہر بار اقلیت کو اکثریت پر غلبہ ہو تا رہا ہے۔آج کل پاپولر ووٹ اور الیکٹوریل ووٹ کی اِصطلاحات کی گونج سنائی دیتی ہے ۔
امریکہ میں ہونے والے حالیہ الیکشن میں ہیلری کلنٹن نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے زائد ووٹ حاصل کیے تھے لیکن الیکٹوریل ووٹ کی بنیاد پر شکست کھا گئیں۔ پاکستان میں ہونے والے انتخابات پر نظر دوڑائیں گے تو عجب منظر نامہ نظر آئے گا ، اگر چہ مقتدر جماعت کو کل ڈالے گئے ووٹوں میں اکثریت کو حمایت ضرو ر ملی ہے لیکن اگر باریک بینی سے غور وخوض کیا جائے تو حیران کن صورتحال دکھائی دیتی ہے ۔
پاکستان کی کل آبادی بائیس کروڑ سے تجاوز کر رہی ہے۔کل ووٹرز دس کروڑ سے زائد بتائے جاتے ہیں، اسی طرح بارہ کروڑ تو چناؤ کے اِس نظام کا سرے سے حصہ ہی نہ ٹھہرے، دس کروڑ ووٹرز میں سے نصف نے رائے شماری کے عمل میں حصہ لیا اسے بھی محتاط انداز میں دیکھا جائے اور دو حصوں میں تقسیم کیا جائے تو چنی جانے والی حکومت کو ملنے والے ووٹوں کی تعداد ہارنے والی جماعتوں کو ملنے والے کل ووٹرز کی تعداد سے زیادہ نہ ہوگی۔

تو گویا بائیس کروڑ کی آبادی میں سے پانچ کروڑ افراد نے حصہ لیا اور ایک کروڑ ارسٹھ لاکھ ووٹ لینے والی جماعت کو اقتدار سونپ دیا گیا، سادہ ترین الفاظ میں جمہوری الیکشن کا نتیجہ قارئین کی نظر کیا گیا ہے باقی ہر شخص کا مشاہدہ اور نتیجہ الگ ہو سکتا ہے لیکن۔۔۔ آخری بات روزِ روشن کی طرح ہے کہ یہ ہر گز اکثریتی حکومت نہیں ہوتی۔

ہمارا دعویٰ ہے کہ جمہوریت کی نام نہاد شکل میں بھی آج تک اکثریتی ووٹرز کی حکومت قائم نہیں ہوتی۔ دنیا بھر میں ہونے والے الیکشنز کا جائزہ لے کر دیکھ لیں ، یہی صورتحال دکھائی دیتی ہے، اگر اس سے قبل از الیکشن دھاندلی یعنی پری پول رگنگ ، دھونس ، زبردستی، انجینئرنگ معینہ مدت کی قید، غلط ووٹ کاسٹنگ، منسوخ یا کسی وجہ سے خراب ووٹ اور نتائج تبدیل کرنے والی تعداد نکال بھی دی جائے تو نہایت قلیل تعدا د باقی بچتی ہے جس کی بنیاد پر حکومتیں بنتی اور بگڑتی ہیں۔

ابرہام لنکن کا پیش کردہ جمہوری نظام اگر چہ دنیا میں قبول کیا جا چکا ہے لیکن اس کی بنیادی خرابیاں آج تک دور نہیں کی جا سکیں اور اس نظام کے بل بوتے پر ہمیشہ اقلیت کو اکثریت کے روپ میں دکھا کر مسند اقتدار پر براجمان کر دیا جاتا ہے۔ سابق صدر ابراہام لنکن نے جمہوریت کی تعریف انگریزی زبان میں کی تھی کہ:
(Govt of the People, for the People, By the People)
جس کا ترجمہ یہ بنتا ہے کہ عوام کی حکومت ، عوام کے لیے حکومت، عوام کے ذریعے بننے والی حکومت۔۔۔
اس ترجمہ میں اگرچہ اکثریت کا لفظ استعمال نہیں ہوا لیکن تصور یہی کیا جاتا ہے کہ عوام کی اکثریت کی حکومت۔ جبکہ اعداد و شمار کا یہ گورکھ دھندا ہے جس کی غلام گردشیں اور بالا خانے سمجھ سے بالا تر ہیں۔ جمہوریت کی مروجہ تعریف میں صرف تین الفاظ تبدیل کر دیے جائیں تو وہ جمہوریت کی تعریف سامنے آتی ہے جس کی شکل حقیقی معنوں میں رائج نظر آتی ہے۔
گورنمنٹ آف کو(Off)لکھا جائے ، گورنمنٹ فار کو(For)پڑھائے اور گورنمنٹ بائی کو(Bye)پڑھا جائے تو بات سمجھ میں آتی ہے۔ البتہ مروجہ تعریف کی بنیاد پر کہیں بھی اکثریتی عوام کی مرضی کی حکومت قائم نہیں ہوتی یہی زمینی حقیقت ہے۔
جمہوریت اس مخمصے کا نام ہے جسے تریاق سمجھ لیا گیا ہے ، حالانکہ اس پر معمولی غور کیا جائے تو بات سمجھ میں آجاتی ہے کہ یہ بندوں کی محض گنتی کا گورکھ دھندہ ہے جس کی بنیاد ہی غیر فطری اصولوں پر رکھی گئی ہے جس کا فطری نتیجہ نکلنا ہی محال ہے ، گنتی کے سبز باغ دکھانے اور جھانسہ دینے کے کھیل میں عاقل و احمق ، عالم و جاہل، اندھا و بینا نیک و بد کی کوئی تمیز باقی نہیں رکھی جاتی۔ اقبال نے کیا خوب کہا تھا۔۔۔
یہ راز ایک مردِ قلندر نے کیا فاش
ہر چند کہ دانا اسے کھولا نہیں کرتے
جمہوریت وہ طرزِ حکومت ہے کہ جس میں
بندوں کو گنا کرتے ہیں تولا نہیں کرتے
پاکستان میں حالیہ انتخابات ،ا س کے نتائج اور مضمرات بہت دیر تک زیر بحث رہیں گے حتیٰ کہ اگلے الیکشن کی باری آجائے گی۔۔۔ لیکن جو نقصان قومی وحدت نظریہ پاکستان اور تہذیبی اقدار کے ورثے کو پہنچا ہے اس کا تدارک کرنے میں اب دہائیاں بیت جائیں گی۔
مختصر یہ کہ نظریہ روحانیت کو شکست ہوئی ہے او ر مادیت معہ اپنے دیگر خبائث کے ہمراہ فاتح ٹھہری ہے، محراب و منبر کے ورثاء اور جُبّہ و دستار کے عَلم برداروں کو قدامت پرست قرار دے کر کوچہ سیاست سے دیس نکالے دینے کی کوششیں کامیاب ہوئی ہیں، وحدتِ امت کا تصور پارہ پارہ ہوا ہے اور دین پسند قوتیں اپنے داخلی اختراق، انتشار اور ذاتی مفادات کے خول سے باہر نہیں نکل پائیں، انہیں بھی تبدیلی کا راستہ ووٹ کی پرچی میں نظر آنے لگا ہے، یہ بھی قوم کی انفرادی و اجتماعی اصلاح کی ذمہ داری سے دستبردار ہو کر وہیل چےئر کے اس کھیل میں شامل ہو گئے جس کی تمام پگڈنڈیاں کوچہ اقتدار تک پہنچ کر دم توڑ دیتی ہیں ۔
وہ اس نظام کا حصہ بن جاتے ہیں جو لڈو کے کھیل میں سانپ اور سیڑھی کا کھیل ہے۔۔۔ سانپ کے منہ پر آنے والا دانہ اس کی دم یعنی صفر پر واپس چلا جاتا ہے جبکہ سیڑھی کے خانے پر پہنچنے والے دانے کو جمپ لگ جاتا ہے اور وہ کئی منزلیں ایک ہی چھلانگ میں پار کر جاتا ہے۔
مروجہ نظام بھی کچھ ایسا ہی ہے ۔ موجودہ نظام بھی سیڑھی کا کھیل ہے لیکن سیڑھی چڑھ کر ترقی کے زینے پر چڑھنے والے یہ بھول جاتے ہیں سیڑھی کسی بھی وقت ہٹائی جا سکتی ہے ،بس وہ فتح کے نشے سے سرشار ہو کر اپنی اوقات بھول جاتے ہیں اور پھر اچانک گھڑیال بج اٹھتا ہے ، بھاری مینڈیٹ اور عوام کے ٹھاٹھیں مارتے جلوس اور ریلیاں روند دی جاتی ہیں۔

نظام کی تبدیلی کا نعرہ سبھی لگاتے ہیں لیکن درخت کی شاخیں اور پتے کاٹ کر اصلاح کی امید لگا لیتے ہیں جبکہ شاخیں برقرار رکھتے ہیں جن سے برگِ بار پھر نمو پا لیتا ہے ۔ نظریاتی حلقے بھی شارٹ کٹ کی تلاش میں نکل پڑیں اور کنویں سے کتا نکالنے کی بجائے پانی کی بالٹیاں نکالتے رہیں تو پانی ناپاک ہی رہے گا۔
حالیہ سیاسی سونامی جنون کے ہاتھی پر سوار ہو کر آئی ہے اگر تدبر اور بُر دباری کا مظاہرہ نہ کیا گیا تو یہ طبقاتی کشمکش سنگین صورتحال اختیار کر سکتی ہے ۔ نظریہ پاکستان پر اپنی اجارہ داری کا ڈھول پیٹنے والے گروہوں کی قومی و ملی ذمہ داری بنتی ہے کہ اسبابِ شکست کی تلاش کر کے مزید خامیاں تلاش کریں اور ان کا تدارک بھی کریں بصورتِ دیگر تاریخ ان کو معاف نہیں کرے گی اور جغرافیہ کی تبدیلی سے ان کا وجود خطرے میں رہے گا۔
سانپ اور سیڑھی کے کھیل سے باہر نکل کر شعور کی تبدیلی کی تحریک کا حصہ بنیں ، مایوسی اور احتجاج محض وقت کا ضیاع ہوگا۔


WhatsApp




متعلقہ خبریں
افغان باقی، کہسار باقی ... مزید پڑھیں
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ ... مزید پڑھیں
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل ... مزید پڑھیں
اسرائیلی تاریخ ... مزید پڑھیں
آسیہ" نامی عیسائی عورت اور ہمارا قانون ... مزید پڑھیں
ارضِ حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
حکمرانوں کے تابناک اور روشن کردار ... مزید پڑھیں
فاطمہ بنت پاکستان کا مقدمہ ... مزید پڑھیں
یہ رہی تمہاری تلاش ... مزید پڑھیں
اقوام متحدہ کے اجلاس کی روداد ... مزید پڑھیں
القدس اپنے محافظ کی تلاش میں ... مزید پڑھیں
یوم یکجہتی کشمیر کا تاریخی تعاقب و اہمیت ... مزید پڑھیں
بنیادی حقوق کا’’سراب‘‘ ... مزید پڑھیں
ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے ... مزید پڑھیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد
افغان باقی، کہسار باقی
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل
اسرائیلی تاریخ
آسیہ" نامی عیسائی عورت اور ہمارا قانون
ارضِ حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں
حکمرانوں کے تابناک اور روشن کردار
فاطمہ بنت پاکستان کا مقدمہ

مقبول خبریں
غیراخلاقی اشتہارات : آن لائن ٹیکسی سروس کریم کے خلاف درخواست دائر
جیسنڈا آرڈرن کا کرائسٹ چرچ حملے کی تحقیقات کے لیے رائل کمیشن بنانے کا اعلان
ناتواں کندھوں پر بھاری ذمہ داری کا بوجھ : قومی ٹیم آج پریکٹس کا آغاز کرے گی
پی ایس ایل 4؛ شریک پلیئرز کو2 دن آرام کا موقع میسر آ گیا
’مجھے اپنے لبرل اور ماڈرن ہونے پر شرمندگی ہے‘
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
آواز اور روشنی کی مدد سے دماغ کی صفائی میں اہم کامیابی ویب ڈیسک بدھ 20 مارچ 2019 شیئر ٹویٹ تبصرے مزید شیئر امریکی جامعات کے ماہرین نے الزائیمرمیں مبتلا چوہوں پر آواز اور روشنی کے تجربات کئے ہیں جس سے حیرت انگیز نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ فوٹو: فائل امریکی جامعات کے ماہرین نے الزائیمرمیں مبتلا چوہوں پر آواز اور روشنی کے تجربات کئے ہیں جس سے حیرت انگیز نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ فوٹو: فائل بوسٹن: ایک نئی تحقیق سے انکشاف ہوا ہے کہ روشنی اور آواز سے تحریک دینے سے دماغ سے وہ فاسد مواد خارج ہوجاتا ہے جو الزائیمر کی وجہ بنتا ہے۔ اسی عمل سے دماغی افعال کو درست کرنے میں بھی مدد ملتی ہے۔ ہم ایک عرصے سے جانتے ہیں کہ جیسے جیسے دماغ میں بی ٹا ایمائی لوئڈ نامی مادہ جمع ہوتا ہے تو وہ ایک اور زہریلے پروٹین ٹاؤ سے مل کر اعصابی سرگرمیوں کو مزید متاثر کرتا ہے اور یوں الزائیمر جیسی بیماری سر اٹھانے لگتی ہے۔ اب حال ہی میں معلوم ہوا ہے کہ الزائیمر کے شکار مریضوں کی دماغی لہروں میں بھی بے قاعدگی اور خرابی پائی جاتی ہے۔ دماغی خلیات یا نیورونز خاص طرح کی برقی تھرتھراہٹ خارج کرتے ہیں جنہیں دماغی امواج یا brain waves کہا جاتا ہے۔ اس سے قبل تحقیق سے معلوم ہوا تھا کہ الزائیمر کے مریضوں میں سب سے بلند فری کوئنسی والی ’گیما‘ دماغی لہروں میں واضح خلل آتا ہے۔ حالیہ چند برسوں میں کیمبرج اور ایم آئی ٹی کے ماہرین نے ثابت کیا ہے کہ بعض اقسام کی لائٹ تھراپی یا روشنی سے علاج کے بعد الزائیمر کے شکار چوہوں میں گیما لہریں دوبارہ بحال کی جاسکتی ہیں جو ثابت کرتی ہیں کہ دماغ میں بیماری کی وجہ بننے والے بی ٹا ایمائی لوئڈ میں کمی واقع ہورہی ہے۔ اب اسی ٹیم نے بتایا ہے کہ روشنی اور آواز کی مدد سے بعض مریضوں میں دماغی بہتری پیدا کی جاسکتی ہے جس کی تفصیلات جرنل سیل میں شائع ہوئی ہیں۔ ایم آئی ٹی کے پروفیسر لائی ہوائی سائی اور ان کے ساتھیوں نے الزائیمر والے چوہوں کو روزانہ 40 ہرٹز کی روشنی میں ایک گھنٹے تک رکھا۔ اس سے چوہوں میں دماغ کا دشمن بی ٹا ایمائی لوئڈ کم ہوا اور ساتھ ہی زہریلے ٹاؤ پروٹٰین کی مقدار بھی کم ہوئی ۔ اس کے بعد چوہوں کو مسلسل سات روز تک 40 ہرٹز کی آواز ایک گھنٹے تک سنائی گئی تو اس کے بھی اچھے نتائج برآمد ہوئے۔ اس سے نہ صرف دماغ میں آوازوں کے گوشے بلکہ یادداشت کے ایک اہم مرکز ’ہیپوکیمپس‘ سے بھی مضر کیمیکل اور پروٹین میں کمی دیکھی گئی ۔ اسی کے ساتھ دماغ میں خون کا بہاؤ بھی بہت بہتر ہوا جو ایک اضافی فائدہ ہے۔ آواز اور روشنی کی مدد سے دماغ کی صفائی میں اہم کامیابی
وہ خاتون جس کا پیشہ ہی بچے پیدا کرنا ہے
سوشل میڈیا پر 1600 دوست بنائیے اور امتحان میں اے پلس پائیے
سوشل میڈیا پر 1600 دوست بنائیے اور امتحان میں اے پلس پائیے
گوگل کی جانب سے ویڈیو گیم اسٹریمنگ کا باضابطہ اعلان
شرح پیدائش پنجاب میں کتنی ہے اور خیبر پختونخوا میں کتنی؟ اعدادوشمار سامنے آگئے
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
بھارت کے میزائل حملے کی دھمکی پر پاکستان کا جواب اور امریکی مداخلت
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
ناتواں کندھوں پر بھاری ذمہ داری کا بوجھ : قومی ٹیم آج پریکٹس کا آغاز کرے گی
پی ایس ایل4 کا میلہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی پہلی ٹائٹل فتح مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
’مجھے اپنے لبرل اور ماڈرن ہونے پر شرمندگی ہے‘
لاہور (ویب ڈیسک)) پاکستان میں عالمی یوم خواتین کے موقع پر ہونے مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
سعودی عرب کی پاکستان کو 2 پاور پلانٹس خریدنے کی منہ مانگی پیشکش
لاہور(ویب ڈیسک) سعودی عرب نے پنجاب کے دو پاور پلانٹس بغیر بولی مزید پڑھیں ...