اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

یورپی یونین سے انخلا کیلیے برطانیہ کو 31 جنوری تک مہلت مل گئی

القدس اپنے محافظ کی تلاش میں


WhatsApp
341



ارے نیتن یا ہو! تم قابض ہو تم ان زمینوں پر قابض ہو

فلسطین کی تاریخ بہت قدیم ہے ، حضرت موسیٰ ؑ نے فلسطین کی طرف بنی اسرائیل کے ہمراہ ہجرت کی۔ یہودیوں نے فلسطین پر کئی سال حکومت کی لیکن بخت نصر نے یہودیوں کا یہاں سے صفایا کر دیا۔
حضرت عمرؓ کے دور میں فلسطین مسلمانوں کے قبضہ میں آگیا ، اس کے بعد خلافت عثمانیہ کے اختتام تک فلسطین پر مسلمانوں کا راج تھا ، صرف صلیبی جنگوں کے زمانے میں صلیبیوں نے90سال تک یہاں قبضہ کیے رکھا۔ لیکن وہ قبضہ سلطان صلاح الدین ایوبی ؒ نے ختم کروادیا۔ 1917ء میں اعلان بالفور کے بعد یہاں یہودیوں کی آمد کا سلسلہ شروع ہوا۔
14مئی 1948ء کو اسرائیل کے قیام کا اعلان ہوا۔1967ء کی جنگ میں اسرائیل نے کئی عرب ممالک کے علاقوں پر قبضہ کر لیا۔ اسرائیل پچھلے 70سال سے فلسطینیوں پر ظلم ڈھا رہا ہے لیکن فلسطینی اسرائیل کی جارحیت کا ڈٹ کر مقابلہ کر رہے ہیں۔
امریکہ کی طرف سے اپنے سفارتخانہ کو بیت المقدس منتقل کرنے پر فلسطینیوں نے سخت احتجاج کیا۔30مارچ2018ء سے غزہ کے شہریوں نے بڑی تعداد میں احتجاج شروع کر دیا تھا۔ اسرائیل کے قیام کی سالگرہ کے دن 14مئی کے قریب آتے ہی ان مظاہروں میں شدت آ گئی (فلسطینی 14مئی کو یومِ نکبہ یعنی تباہی کہتے ہیں) غزہ کی باڑ کے نزدیک 50ہزار سے زائد مظاہرین پر اسرائیلی فوج نے ننگی فائرنگ شروع کر دی۔
100 سے زائد فلسطینی شہید اور 3000کے قریب سخت زخمی ہو گئے۔ شہید ہونے والے فلسطینیوں کو یومِ نکبہ کے دن دفنایا گیا، اسرائیلی فوج کی بر بریت کے خلاف جب اقوام متحدہ میں قرارداد پیش ہوئی تو امریکہ بہادر نے اس قرارداد کی مخالفت کی۔ وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے بے شرمی کی ساری حدیں پار کرتے ہوئے کہا کہ ان اموات کی ذمہ داری حماس پر عائد ہوتی ہے، اسرائیلی فوج کے ایک ترجمان کا کہنا تھا کہ انہوں نے دہشت گردوں پر فائرنگ کی ہے۔
اسرائیلی چالبازوں کو پتہ ہو نا چاہیے کہ اپنی بقاء کی جنگ لرنے والے لوگ دہشت گرد نہیں حریت پسند ہوتے ہیں۔ یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ فیوریکا موگرینی بھی اسرائیلی ظلم پر خاموش نہ رہ سکیں ، ان کا کہنا تھا کہ غزہ باڑ کے نزدیک جاری مظاہروں میں درجنوں فلسطینی اسرائیلی فائرنگ سے ہلاک ہو چکے ہیں۔
اقوام متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق نے اسرائیلی فوج کی بر بریت کی تحقیقات کے لیے ایک آزاد تحقیقاتی کمیشن غزہ بھیجنے کا اعلان کیا ہے، یہ کمیشن اپنی رپورٹ اگلے سال مارچ میں پیش کرے گا۔ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ادارے کے سربراہ زیو رعاد الحسین کا کہنا تھا کہ ’’ غزہ کے رہنے والے ایک زہر آلود پنجرے میں بند ہیں۔‘‘
دونوں جانب سے ہلاکتوں کی تعداد میں واضح فرق سے اندازہ ہو تا ہے کہ اسرائیلی رد عمل کلی طور پر ناجائز تھا ، اسرائیلی جارحیت دانستہ قتل کے زمرے میں آتی ہے اور یہ جنیوا کنونشن کی خلاف ورزی ہے۔ترک صدر رجب طیب اردگان کا کہنا تھا :
’’ ارے نیتن یا ہو! تم قابض ہو تم ان زمینوں پر قابض ہو ، ساتھ ہی تم دہشت گرد بھی ہو۔‘‘
اسرائیل کے خلاف موجودہ مظاہروں کا آغاز ہفتہ یوم الارض کے موقع پر ہوا۔ اس سے مراد فلسطینیوں کی گھر چلو تحریک ہے،مظاہرین نے2007 ء سے جاری غزہ کی ناکہ بندی ختم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ فلسطینیوں کو ان کے گھر واپس جانے دیا جائے، اب تک شہادتوں کی کل تعداد120ہو چکی ہے،30مارچ 2018ء سے جاری اس تحریک کو تادم تحریر 6مہینے ہو چکے ہیں۔
ہر جمعہ کو فلسطینی اسرائیلی سیکورٹی باڑ پر جمع ہوتے ہیں اور اپنے گھروں کو واپسی کے لیے مظاہرے کرتے ہیں اور اسرائیلی فوج ان پر امن مظاہرین کو جارحیت کا نشانہ بناتی ہیں، ان ہزاروں فلسطینی شہداء کے لیے یہ اسرائیلی باڑ دیوارِ گریہ کی صورت اختیار کر چکی ہے۔ فلسطینی یہاں آزادی مانگنے آتے ہیں اور کندھوں پر لاشیں اٹھا کر واپس جاتے ہیں۔
افسوس ! فلسطینی 70سالوں سے رزم گاہ میں ڈٹے ہوئے ہیں لیکن عہد حاضر کے مسلم حکمران عمر فاروق کی بجائے میر جعفر و صادق کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ مشرق وسطیٰ کے مسلم حکمران خود تو رزم گاہ میں اترنے سے خوفزدہ ہیں ہی لیکن وہ بیت المقدس کے تحفظ کی جنگ لڑنے والے مجاہدین کی ناکہ بندی میں بھی برابر کے شریک ہیں ۔ پاکستان ، ترکی اور انڈونیشیا نے پھر زبانی طور پر فلسطینی عوام کی حمایت کی ہے لیکن کچھ مسلم ممالک کے حکمرانوں کو ایک بیان دینے کی بھی توفیق نہیں ہوئی۔
فلسطین کے مجاہدو! تم ڈٹے رہو، کیونکہ تاریخ کے صفحات میں امت کے دفاع کی جنگ لڑنے والے مجاہدوں کے نام سنہرے حروف سے لکھے جاتے ہیں۔ تمہارا شمار سلطان جلال الدین خوارز م اور سلطان صلاح الدین ایوبی جیسے دلاوروں کے ساتھ ہو گا اور اپنے محلات میں دبک کر بیٹھے رہنے والے بادشاہوں اور حکمرانوں کے نام بغداد کے بے حس خلفاء اور اندلس کے عیاش امراء کے ساتھ لکھیں جائیں گے۔
تم وارث موسیٰ بن ابی غسان ہو اور وہ وارثین ابو عبد اﷲ ، تم جلال الدین کے وارث ، وہ معتصم با اﷲ کے وارث ، تم عمرؓ کے اسوہ پر ڈٹے رہو کہ عزیمتیں اور سعادت مندیاں تمہارے لیے ہیں ۔ ہر سچے مسلمان کے دل تمہارے ساتھ دھڑکتے ہوں، اﷲ تمہیں اپنی امان میں رکھے۔
ان150سے زائد فلسطینی شہداء کا خون ہرگز رائیگاں نہیں جائے گا، شہداء کے خون کی سرخی اِک دن ضرور رنگ لا کے رہے گی۔ یہ صیہونی اور صلیبی گٹھ جوڑ ان شہداء کی قربانیوں سے پاش پاش ہو کر رہے گا۔ ان شا ء اﷲ ڈٹے رہو فلسطینی مجاہدو اﷲ تمہارے ساتھ ہے۔


WhatsApp




متعلقہ خبریں
عمران خان نے انیس سو انتالیس کے میونخ کا حوالہ ... مزید پڑھیں
بلوچستان سے خلائی سائینسدان کا ظہور ... مزید پڑھیں
ٹیم اور کپتان ... مزید پڑھیں
بھٹو کیوں زندہ ہے؟ ... مزید پڑھیں
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد ... مزید پڑھیں
افغان باقی، کہسار باقی ... مزید پڑھیں
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ ... مزید پڑھیں
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل ... مزید پڑھیں
اسرائیلی تاریخ ... مزید پڑھیں
آسیہ" نامی عیسائی عورت اور ہمارا قانون ... مزید پڑھیں
ارضِ حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
حکمرانوں کے تابناک اور روشن کردار ... مزید پڑھیں
فاطمہ بنت پاکستان کا مقدمہ ... مزید پڑھیں
یہ رہی تمہاری تلاش ... مزید پڑھیں
اقوام متحدہ کے اجلاس کی روداد ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
سیاست کے کھیل کا بارہواں کھلاڑی
عمران خان نے انیس سو انتالیس کے میونخ کا حوالہ کیوں دیا؟
بلوچستان سے خلائی سائینسدان کا ظہور
ٹیم اور کپتان
بھٹو کیوں زندہ ہے؟
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد
افغان باقی، کہسار باقی
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل

مقبول خبریں
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
انٹرنیشنل کرکٹ چاہیے بھلے ’بی ٹیم‘ ہی سہی
اکتوبر 1990 میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو پاکستان کے دورے پہ مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
وینا اداکاری سے گلوکاری کا سفر
وینا ملک کو زیادہ تر لوگ بطور اداکارہ و ماڈل جانتے ہیں مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ، کون کونسے بینک مزید پڑھیں ...