اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

یورپی یونین سے انخلا کیلیے برطانیہ کو 31 جنوری تک مہلت مل گئی

استادِ محترم کو میرا سلام کہنا


WhatsApp
516



استادِ محترم کو میرا سلام کہنا

جمعرات کے دن پروفیسر مجاہد کامران کو لگنے والی ہتھکڑی نے پروفیسر ڈاکٹر اکرام اور ڈاکٹر علقمہ کو لگنے والی ہتھکڑی کی آواز کو بھی بانگِ درا میں تبدیل کر دیا۔ جس سال ڈاکٹر مجاہد کامران عدالتی حکم پر جامعہ پنجاب سے رخصت ہوئے میں اس سال جامعہ کا طالب علم تھا ، اس بحث کو ایک طرف رکھتے ہوئے کہ مجاہد کامران کا جرمِ حقیقی کیا ہے؟؟؟
سینکڑوں معصوموں کے قتل اور جعلی پولیس مقابلوں کا ماہر راؤ انوار قتل کے مقدمات کے باوجود ریاستی اداروں کی طاقت کے اظہار کے طور پربنا ہتھکڑی عدالت میں لایا جاتا ہے اور شاہی مہمان کی طرح چند دن ’’ حفاظتی تحویل ‘‘میں رہتا ہے۔
احسان اﷲ احسان جیسا دہشت گرد آج بھی ریاست کی ’’ حفاظتی مہمان نوازی‘‘ سے لطف اندوز ہو رہا ہے ، سب سے بڑھ کر اس مملکت خداداد کو لخت لخت کرنے والے فوجی اور سیاسی مجرموں پر عدالتوں کے در وازے ابھی تک وا نہیں ہو سکے۔
سرگودھا یونیورسٹی میں ڈاکٹر اکرم کے کارناموں کی تفاصیل بہت ساری جگہوں پر پڑھی بھی اور سنی بھی ہیں لیکن اس کی تازہ ترین تفصیل ممتاز کالم نگار جناب رؤف طاہر کے تاز ہ کالم میں پڑھی تو قوم کے اس محسن کے ساتھ ہونے والے سلوک نے مجھے شرمندہ و آبدیدہ کر دیا۔
اسی طرح پروفیسر علقمہ کی گرفتاری اور اس ضمن میں لگائے جانے والے الزامات اور بہا ؤ الدین ذکریا یونیورسٹی کے انتظامی امور کی انجام دہی میں بے ضابطگیوں کے قصے ہنسا دینے کے لیے کافی ہیں۔
اب آتا ہوں مجاہد کامران کی طرف ’’عیب زدہ نیب ‘‘کو اگر خبر نہیں تو بتائے دیتا ہوں کہ موجودہ نیب کے موجد جنرل مشرف کے دور میں ہی جامعہ پنجاب کی ذمہ داری سونپی گئی ، پھر پیپلز پارٹی نے بھی انہیں اس عہدے پر برقرار رکھا ، اس کے بعد نواز شریف حکومت میں بھی وہی اس عہدے کے حقدار قرار پائے ۔۔۔ آخر کار عدالت نے پنجاب حکومت کے جامعات کے سربراہان کی تقرری کے طریقہ کار کو جب مسترد کیا تو ڈاکٹر کامران مجاہد بھی اسی فیصلے کی روشنی میں رخصت ہوئے۔
ایک جگہ پر کام کرتے ہوئے اوراسی معاشرے میں رہتے ہوئے انسان کے کچھ مداح بھی ہوتے ہیں اور مخالف بھی۔۔۔
مجھے مجاہد کامران کے دور میں سر انجام پانے والے ایسے شاندار کارناموں کی اک لمبی فہرست یاد ہے لیکن یہاں اسے دہرانا مقصود نہیں ۔۔۔ یقیناً جو بندہ کام کرے گا وہ غلطی بھی کرے گا۔۔۔ لیکن ایک ایسا شخص جس نے قوم کے بچوں کو46سال تک تعلیم کے زیور سے آراستہ کیا، جِسے ریاست کے اعلیٰ منصب صدرِ پاکستان نے تمغہ حسنِ کارکردگی سے نوازا ، جسے پاکستان میں آئن سٹائن ایوارڈ کے لیے نامزد ہونے کا منفرد اعزا ز حاصل ہوا۔
ایسے چند سطحی محکمہ جاتی کاروائیوں کے ضمن میں آنے والے الزامات کے بدلے میں یو ں تذلیل و تضحیک کا نشانہ بنانا قطعی طور پر ناقابلِ برداشت ہے ۔
کوئی شک نہیں کہ مجاہد کامران کو لگنے والی ہتھکڑی تعلیم کو لگنے والی ہتھکڑی ہے، شعور کو جلاد ینے والے شخص کو لگنی والی ہتھکڑی ہے،معاشرے کے روشن پہلو کو تاریک کرنے کا سبب ہے او ر اس کے ساتھ ساتھ اساتذہ برادری کی جانب سے نظر آنے والی خاموشی مجرمانہ ہے اگر میڈیااس مسئلے کو اس طرح سے اُجاگر نہ کرتا تو اساتذہ تنظیمیں بھی خوابِ غفلت سے بیدا ر نہ ہو پاتیں۔
ایک اہم اور چونکا دینے والی خبر یہ ہے کہ’’ عیب زدہ نیب ‘‘ان سربراہان جامعہ کو دباؤ میں لا کر سابقہ حکومت خصوصاً شہباز شریف کے خلاف دباؤ میں لا کے وعدہ معاف گواہ بنانا چاہتا ہے۔
اگر یہ اطلاع درست ہے تو نیب کو یہ بات مدِ نظر رکھنی چاہیے کہ سرگودھا اور لاہور کے جامعات کے سربراہان کا تقرر شہباز شریف نے نہیں کیا تھا ۔بلکہ ڈاکٹر مجاہد کامران بھی مشرف دور میں اس منصب سے فائز ہوئے اور ڈاکٹر اکرم پیپلز پارٹی کے دور میں اس منصب پر بٹھائے گئے۔
تبدیلی کے علمبرداروں سے بھی دست بدستہ عرض ہے کہ آپ سیاست کے گند، انتقام اور احتساب کی روش کو ترک کیجیے اور اگر اسے برقرار رکھ کر ترقی کی منزل پانا چاہتے ہیں تو ازراہِ کرم وطنِ عزیز کے تعلیمی اداروں اور اساتذہ کرام کو اس اکھاڑے میں مت گھسیٹیں۔
یہ بھی آپ کی تبدیلی کے علم کے رہینِ منت ہی ہے کہ پہلے آپ نے خیبر پختونخوا میں مردان اور پشاور کے وائس چانسلر ز جو اے این پی مقرر کیے تھے ان کو منصب سے ہٹا کر عدالتوں میں گھسیٹ کر ان کی عزت افزائی کی اور آج تبدیلی کا یہ مکروہ ناگ پنجاب کے اندر قوم کے محسنوں کو ڈس کر معاشرے کی بیماری کی چغلی کھا رہا ہے آپ حکومت کیجیے اور سیاسی دشمنوں سے پنجہ آزما رہیے لیکن اس معاشرے کی روایت ہے کہ یہاں لوگ استاد کو باپ سمجھتے ہیں،اس کی جگہ پر نہیں بیٹھتے ،اس کے آگے سے نہیں گذرتے ، وہ بیٹھا ہو تو ادب سے کھڑے ہوتے ہیں ۔
ہماری مذہبی ،علاقائی اور قومی اقدار بھی ہیں، ہم آپ کے تبدیلی کے اس طوفان میں اپنی ان اقدار کو بہنے نہیں دیں گے ، قوم کے محسنوں کے ساتھ نیب کے اس رویے پر چیف جسٹس کا نوٹس بھی ایک اہم اقدام ہے لیکن ڈی جی نیب کی آبدیدگی پر اور باہر آکر میڈیا اور کیمروں کے سامنے خفگی ڈی جی نیب کا یہ رویہ قابلِ مذمت ہے۔
جناب چیف جسٹس! آپ کو ان تین قوم کے محسنوں کے کیس کو ٹیسٹ کیس بنانا ہو گا اور اگر ان سے انتظامی امور میں کوئی کوتاہی بھی ہوئی ہے تو وہ محکمانہ کاروائی یا انکوائری جس کے وہ سزاوار ہیں ضرور ہونی چاہیے لیکن اساتذہ کی تذلیل ، اپنے سیاسی دشمنوں کے انتقام کے لیے ان پر دباؤ ڈال کر مرضی کے بیانات دلوانے کی کوششیں اس سب پر جناب چیف جسٹس اتنی ہی نظر رکھنا ضروری ہے جتنی آپ میاں نواز شریف کو سزا دلوا کے ملک کو کرپشن سے پاک کرنے کی مہم پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔
جتنے آپ صحت کے امور پر فکر مند ہیں۔
جتنے آپ ڈیم کے لیے متفکر ہیں۔
یاد رکھیں! اگر اس قوم کے استاد کی تذلیل کی مثالیں اس طرح قائم ہونے لگیں تو لوگ استاد بننے سے کترائیں گے اور اگر ایسا ہو گیا تو معاشرہ تخلیقی ذہن پیدا کرنے سے محروم ہو جائے گا اور اگر یہ سب ہو ا تو پھرہم اس بنجر زمین کی طرح ہو جائیں گے جہاں صرف جھاڑیاں اور کانٹے اگتے ہیں ، ہریالی ، پھل اور اناج ان زمینوں کا مقدر نہیں ہوتا۔
خدارا! میرے اساتذہ کا احترام کیجیے۔
استادِ محترم کو میرا سلام کہنا


WhatsApp




متعلقہ خبریں
عمران خان نے انیس سو انتالیس کے میونخ کا حوالہ ... مزید پڑھیں
بلوچستان سے خلائی سائینسدان کا ظہور ... مزید پڑھیں
ٹیم اور کپتان ... مزید پڑھیں
بھٹو کیوں زندہ ہے؟ ... مزید پڑھیں
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد ... مزید پڑھیں
افغان باقی، کہسار باقی ... مزید پڑھیں
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ ... مزید پڑھیں
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل ... مزید پڑھیں
اسرائیلی تاریخ ... مزید پڑھیں
آسیہ" نامی عیسائی عورت اور ہمارا قانون ... مزید پڑھیں
ارضِ حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں ... مزید پڑھیں
حکمرانوں کے تابناک اور روشن کردار ... مزید پڑھیں
فاطمہ بنت پاکستان کا مقدمہ ... مزید پڑھیں
یہ رہی تمہاری تلاش ... مزید پڑھیں
اقوام متحدہ کے اجلاس کی روداد ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
سیاست کے کھیل کا بارہواں کھلاڑی
عمران خان نے انیس سو انتالیس کے میونخ کا حوالہ کیوں دیا؟
بلوچستان سے خلائی سائینسدان کا ظہور
ٹیم اور کپتان
بھٹو کیوں زندہ ہے؟
شاہ سلمان کی آمد ۔۔۔بہار کی آمد
افغان باقی، کہسار باقی
اقلیتوں کا عالمی دن۔۔۔تجزیہ
ارض حرمین پر منڈلاتی گھٹائیں
سانپ اور سیڑھی کا کھیل

مقبول خبریں
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں فائرنگ کرکے 3 افراد کوقتل کرنے والے حملہ آورکی ہلاکت کی تصدیق

سپورٹس
انٹرنیشنل کرکٹ چاہیے بھلے ’بی ٹیم‘ ہی سہی
اکتوبر 1990 میں نیوزی لینڈ کی ٹیم کو پاکستان کے دورے پہ مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
وینا اداکاری سے گلوکاری کا سفر
وینا ملک کو زیادہ تر لوگ بطور اداکارہ و ماڈل جانتے ہیں مزید پڑھیں ...
مذہب
بیویاں شوہروں کو طلاق دے سکیں گی والا نکاح نامہ زیرغور نہیں، اسلامی نظریاتی کونسل
اسلام آباد(ویب ڈیسک) اسلامی نظریاتی کونسل کا کہنا ہے کہ مزید پڑھیں ...
بزنس
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ
10 بینکوں کو80 کروڑ روپے سے زائد جرمانہ، کون کونسے بینک مزید پڑھیں ...