اردو | العربیہ | English



اردو | العربیہ | English

ترک صدارتی انتخابات میں رجب طیب اردگان فتح یاب

چائلڈ لیبر۔۔۔۔ایک المیہ


WhatsApp
507




صبح جب میں کامران بلاک اقبال ٹاؤن ڈونگی گراؤنڈ سے فٹ بال کھیل کے نکلا تو ایک بڑی معصوم آواز میری سماعت سے ٹکرائی ۔۔۔انکل آپ بھٹو تکہ شاپ کی طرف جارہے ہیں؟مجھے بھی لے جائیں نا۔۔۔پیچھے مڑ کر دیکھا تو قریباً آٹھ دس سال کا ایک معصوم بچہ سر پر ایک بھاری لوہے کا تختہ اٹھائے کھڑا تھا۔معصوم صورت ،معصومانہ انداز گفتارمجھے اس کی شکل دیکھ کر ترس بھی آیا اور پیار بھی۔ترس اس لیے کہ دیکھو یار کیا زمانہ آگیا ہے۔غربت نے میرے ملک میں اس قدر گھر کر لیا ہے کہ آٹھ دس سال کے جس بچے کو اس وقت سکول میں ہوناچاہئیے وہ مزدوری کرنے نکلا ہوا ہے۔اور پیار اس لیے کہ جب میں نے اسے پوچھا کہ بیٹا آپ پڑھتے نہیں ہو؟تو کہنے لگا انکل بابا کو فالج ہے۔اور گھر پہ بیمار پڑے رہتے ہیں۔مجبوری ہے اگر کام نہیں کروں گا تو کھاؤں گا کیسے ؟میں نے ہمدردانہ لہجے میں پوچھا بیٹا گھر میں اور کوئی بڑا نہیں ہے کمانے والا؟اس نے کہا انکل جی مجھ سے ایک سال بڑی ایک بہن ہے ۔وہ امی جی کے ساتھ گھر پر ہی رہتی ہے۔اور مجھ سے دو تین سال بڑا ایک بھائی ہے۔وہ کام کم اور شرارتیں زیادہ کرتا ہے۔اس لیے اسے کوئی کام پر ہی نہیں رکھتا۔
میں نے مزید پوچھا بیٹا تم کتنے گھنٹے کام کرتے ہو۔اور تنخواہ وغیرہ کتنی ہے؟
انکل جی صبح سے شام تک کام کرتا ہوں۔اور مہینے کی ساڑھے سات ہزار تنخواہ ہے۔اس کا جواب سن کر کچھ دیر کے لیے تو میں سکتے میں ہی آگیا۔پھر بے اختیار اگلا سوال کر دیا۔چھوٹے میاں اتنے پیسوں میں گزارا ہوجاتا ہے؟
جی صاحب جی ہو جاتا ہے۔۔۔اس نے کمال معصومیت اور قناعت پسندی سے جواب دیا۔میں نے مزید ایک اور سوال کیا چھوٹو گھر اپنا ہے یا کرائے پر؟
صاحب جی کرائے پر ہی ہے۔
کتنا کرایہ ہے ؟
سات ہزار ہے صاحب جی۔
میں پھر سے تصویر حیرت بنا اسے تکتا رہا اور وہ بڑی معصومیت سے کھڑا مجھے دیکھتا رہا۔میں نے بائیک سٹارٹ کی اسے پیچھے بٹھایااور بھٹو تکہ شاپ کی جانب چل پڑا۔صحافتی ہس سے مجبورہو کر میں نے ایک اور سوال کیا
چھوٹے! رہتے کدھرہو؟
انکل جی !منصورہ۔
تھوڑی دیر خاموشی نے ہمارا ساتھ دیا ازراہ ہمدردی ونصیحت میں نے اس سے کہا
بچے!ً تھوڑا وقت نکال کر پڑھا بھی کرو۔یہ پڑھائی تمہارے بہت کام آئے گی۔
صاحب جی!آپ بالکل ٹھیک کہتے ہیں مگر کیا کروں مجبوری ہے۔کل استاد نے پیسے نہیں دیے تو اس وجہ سے ابھی خالی پیٹ ہی کام پر آنا پڑا۔گھر میں آٹا بھی نہیں ہے ۔سب بھوکے بیٹھے ہیں۔مجھ سے یہ سب دیکھا نہیں جاتا۔اس لیے مزدوری کرنے آجاتا ہوں۔اور جو تھوڑے بہت پیسے ملتے ہیں۔گھر کا راشن لے جاتاہوں۔جس سے گھر کا چولہا جلتا ہے۔اس کا جواب سن کر میری آنکھوں میں آنسو تیرنے لگے۔دل تو بڑا کیا کہ ابھی جاؤں اور اسے کسی سکو ل میں داخل کروا کر آؤں اور اس کے گھر کا تمام خرچہ خود اٹھاؤں۔پر جلد ہی ہوش وحواس نے جذبات کے منہ پر ایک زور دار تمانچہ رسید کرتے ہوئے آئینہ دکھا یا کہ تم خود ابھی ایک سٹوڈنٹ ہو۔اپنا آپ ہی سنبھال لو تو بڑی بات ہے۔۔۔۔۔چلے ہو ۔۔۔۔۔۔
اتنے میں چھوٹو کی منزل آگئی ۔میں نے اسے کچھ پیسے دیے اور کہا۔تم خود بھی پیٹ بھر کے کھانا کھاؤ اور گھر والوں کے لیے بھی راشن لیتے جاؤ۔اتنا کہہ کر میں نے ادھر سے نکلنے کی ۔۔۔
گھر کی جانب آتے ہوئے ضبط سے جنگ جیت کر جذبات کی رو میں بہتے میرے آنسو مجھے دور فاروقی میں لے گئے ۔میں نے دیکھا کہ خلیفہ وقت بھیس بدل کر رات کے پچھلے پہر گلیوں کے طواف کر رہا ہے یہ جاننے کے لیے کہ میری سلطنت میں سب ٹھیک ٹھاک تو ہے نا۔۔۔اچانک اسے ایک گھر سے بچوں کے رونے کی آوازیں سنائی دیتی ہیں۔وہ رک کے غور سے سنتا ہے پھر اس گھر کا دروازہ کھٹکھٹاتا ہے۔ایک باپردہ خاتون دروازے پر آتی ہے ۔خلیفہ وقت بچوں کے رونے کا سبب دریافت کرتا ہے۔پہلے تو خاتون ٹال مٹول سے کام لیتی ہے۔پر خلیفہ کے اصرار پر وہ گویا ہوتی ہے کہ بچے کئی دن سے بھوکے ہیں گھر میں کھانے کے لیے کچھ بھی نہیں ہے۔بچوں کو دلاسہ دینے کے لیے ہانڈی میں کنکریاں ڈال کر آگ پر چڑھا رکھا ہے۔خلیفہ اس حالت زار پر دلبرداشتہ ہو جاتا ہے ۔آنکھوں میں آنسو لیے بیت المال کی طرف دوڑتا ہے۔غلام کے اصرار کے باوجود اپنی پیٹھ پر اناج کی بوریاں لاد کر اس گھر تک لاتا ہے۔معذرت کے تاثر کے ساتھ وہ اناج کی بوریاں خاتون کو پیش کرنے کے ساتھ ساتھ ماہانہ وظیفہ مقررکرتا ہے۔اور نج لائن ٹرین منصوبے کی وجہ سے تباہ شدہ ملتان روڈ سے گزرتے ہوئے جب ایک زور دار جمپ لگتا ہے ۔تو اچانک دور فاروقی سے کئی کلا بازیاں کھاتے ہوئے میاں برادران کے دور میں آگرتاہوں۔ ہوش میں آتے ہی خیال آتا ہے کہ ہاں ہاں بھٹو تو ابھی زندہ ہے۔اور پھر خیالات کا ایک طوفان بدتمیزی اٹھ کھڑا ہوتا ہے۔
خیالات کی جاری جنگ کے دوران میں ہی گھر پہنچ جاتاہوں۔ہاتھ منہ دھو کر ذرا فریش ہوتا ہوں ،ناشتہ کرتا ہوں مگر وہ بھولی صورت آنکھوں سے اوجھل ہونے کے لیے تیا رہی نہیں۔مجبوراً اپنے خیالات کو الفاظ کی صورت دینے کے لیے اور اپنے ذہنی بوجھ کو تحریر کے سپرد کرنے کے لیے قلم اٹھا لیتاہوں۔مگر آنسو برابر آنکھوں میں تیر رہے ہیں۔ایسا لگ رہا ہے جیسے وہ معصوم صورت کئی سوالوں کے جواب لینے کے لیے متواتر میرے تعقب میں ہے۔بڑے افسوس کی بات ہے کہ ہمارے اس پیارے چمن کے 24ملین پھول جیسے بچے ایسے ہیں جو سکو ل ہی نہیں جاتے اور ان میں سے 15ملین ایسے ہیں جو چائلڈ لیبر کی دردناک اذیت کا شکارہیں۔یہ اعدادوشمار میرے ذاتی نہیں بلکہ باوثوق اداروں کے ہیں۔چائلڈ لیبر واقعی ہمارا ایک بہت بڑا المیہ ہے۔پتا نہیں کب ہمارے ذمہ داران اس بات کو سمجھیں گے۔کہ جب تک ہم اپنے ان معصوم بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ نہیں کرتے اس ملک کے حالات نہیں بدل سکتے۔اللہ ہمیں عمل کی توفیق دے اور اپنے حفظ وامان میں خوش وخرم رکھے ۔
آمین
ادراہ : ٹائمز آف لاہور


WhatsApp




متعلقہ خبریں
بچوں کا اغوا،ا عضاء فروشی اور افواہوں کا بازار ... مزید پڑھیں
کشمیر ۔۔۔۔۔آزادی کی صبح جلد طلوع ہونے والی ہے ... مزید پڑھیں
پھر نئے طالبان ... مزید پڑھیں
"سیاسی اصطبل کے گدھے " ... مزید پڑھیں
حقوقِ نسواں کا غلط استعمال ... مزید پڑھیں
’’34 ملکوں کا مذاق‘‘ ... مزید پڑھیں
اسلام میں عورت کا مقام ... مزید پڑھیں
غم کی طویل رات ... مزید پڑھیں
گنگو تیلی ... مزید پڑھیں
نیب کا جن بوتل سے باہر ... مزید پڑھیں
اقبال کا پا کستان ( لوہے کا چنا ) ... مزید پڑھیں
پاکستان میں چینیوں کی سیکورٹی، اولیں ذمے داری ... مزید پڑھیں
سی پیک کے بارے میں بدگمانیوں کا نیا سلسلہ ... مزید پڑھیں
پاکستان بمقابلہ حکومت پاکستان ... مزید پڑھیں
سازش ... مزید پڑھیں
برکس مشترکہ اعلامیہ میں لشکر طیبہ اور جیش محمد کی ... مزید پڑھیں
متعلقہ خبریں
استعمای عزائم اور دفاع وطن کے تقاضے
بچوں کا اغوا،ا عضاء فروشی اور افواہوں کا بازار
کشمیر ۔۔۔۔۔آزادی کی صبح جلد طلوع ہونے والی ہے
پھر نئے طالبان
"سیاسی اصطبل کے گدھے "
حقوقِ نسواں کا غلط استعمال
’’34 ملکوں کا مذاق‘‘
اسلام میں عورت کا مقام
غم کی طویل رات
گنگو تیلی

مقبول خبریں
انتخابی امیدواروں کی حتمی فہرستیں جاری، انتخابی نشان کی بھی الاٹمنٹ
ترک صدارتی انتخابات میں رجب طیب اردگان فتح یاب
اوپننگ میں 17واں تجربہ بھی کامیاب نہ ہوسکا
پاکستان نے پہلے ٹی ٹوئنٹی میں ویسٹ انڈیز کو 9 وکٹوں سے شکست دے دی
ماہ نور بلوچ کی تصاویر سوشل میڈیا پر ایک بار پھر وائرل
استعمای عزائم اور دفاع وطن کے تقاضے
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
انسانی جسم میں 2 دماغ ہوتے ہیں،ماہرین کاانکشاف
امریکہ میں ایسا بل منظور ہو گیا کہ فاحشاؤں نے ٹوئٹر کا استعمال ہی بند کر دیا، اب کون سا سوشل میڈیا استعمال ہوگا ؟
لاہور چڑیا گھر میں جانوروں کی گرمی بھگانے کا دیسی نسخہ؟
لاہور چڑیا گھر میں جانوروں کی گرمی بھگانے کا دیسی نسخہ؟
دو سورج نگلنے والا بلیک ہول
شرح پیدائش پنجاب میں کتنی ہے اور خیبر پختونخوا میں کتنی؟ اعدادوشمار سامنے آگئے
درود پر تنازع‘ جہلم ،مسجد کے منتظم پر توہینِ مذہب کا مقدمہ
انڈیا کی نصف آبادی کو پانی کے بحران کا سامنا
ویڈیو گیلری

آزادی کی تحریکوں کو دبایا تو جا سکتا ہے لیکن ختم نہیں کیا جا سکتا : پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط

بھارتی اشتعال انگیزی کا ذمہ داری سے جواب دے رہے ہیں ،عاصم باجوہ

پاکستان اورسعودی عرب حقیقی بھائی ہیں،علما اکرام مسلم امت کے اتحاد میں کردار ادا کریں:امام کعبہ

بڈگام میں بھارتی فوج کی فائرنگ، مزید 8 کشمیری شہید، پاکستان کا شدید احتجاج

فرانس میں تیز رفتار گاڑی فوجیوں پر چڑھ دوڑی، 6 زخمی

سپورٹس
اوپننگ میں 17واں تجربہ بھی کامیاب نہ ہوسکا
عباس رضا / اسپورٹس رپورٹر ہفتہ 9 جون 2018 لاہور: گزشتہ 6 مزید پڑھیں ...
ویب ٹی وی
ٹورازم
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔
پاکستان میں خوبصورت اور دلکش مناظر کی کمی نہیں ہے۔ posted by Abdur مزید پڑھیں ...
انٹرٹینمینٹ
ماہ نور بلوچ کی تصاویر سوشل میڈیا پر ایک بار پھر وائرل
کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان کی معروف اور سدا بہار اداکارہ ماہ نور مزید پڑھیں ...
مذہب
درود پر تنازع‘ جہلم ،مسجد کے منتظم پر توہینِ مذہب کا مقدمہ
جہلم ( ویب ڈیسک) پاکستان کے صوبۂ پنجاب کے ضلع جہلم کی مزید پڑھیں ...
بزنس
حکومت کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ
اسلام آباد: حکومت نے 7 جون تک پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے مزید پڑھیں ...